ملک بھر ہر سال 5ہزار افراد کی کتوں کے کاٹنے سے ہلاکت کا انکشاف

ملک بھر ہر سال 5ہزار افراد کی کتوں کے کاٹنے سے ہلاکت کا انکشاف

پشاور(آن لائن) پشاور سمیت ملک بھر میں ہر سال 2سے 5ہزار افراد ریبیز ( پاگل کتے) کے جراثیمی بیماری سے ہلاک ہو جاتے ہیں۔ صوبے بھر میں کتوں اور چوہوں کے کاٹنے والی ویکسین کا سٹاک سرکاری ہسپتالوں ، ضلعی محکمہ صحت کے دفاتروں میں ختم ہو چکا ہے۔ سرکاری ہسپتالوں اور ضلعی محکمہ صحت کے دفاتروں میں سٹاک ختم ہونے کے باعث سینکڑوں افراد کی زندگیاں رسک پر لگ گئی ہیں ۔ جبکہ دنیا میں 7لاکھ افراد جلدی انفیکشن لیشمنیز سے متاثر ہوتے ہیں ۔ 20سے 30ہزار افراد اس جلد ی امراض کا سبب ہوتے ہیں ماہرین کے مطابق اس امراض میں لیشمینز ، ڈینگی ، ریبیز وغیرہ شامل ہیں ۔ آوارہ کتوں کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے کوئی پالیسی موجودنہیں ہے۔ پشاور میں کتوں کی فروخت کی منڈیاں شاہی باغ کے قریب ہر جمعہ اور اتوار کے روز لگتی ہیں ۔ جس میں ایک ہزار سے پچاس ہزار روپے تک فی کتا فروخت ہوتا ہے ۔ جبکہ شہر میں آوارہ کتوں کی بھر مار کے باعث روزانہ بچوں ، خواتین کو کاٹنے کے واقعات میں بھی اضافہ ہور ہا ہے ۔

کتوں کی ویکسین ختم

مزید : علاقائی