تیونس کے وزیر صحت سرکاری ہسپتال میں 11 نوزائیدہ بچوں کی ہلاکت پر مستعفی

تیونس کے وزیر صحت سرکاری ہسپتال میں 11 نوزائیدہ بچوں کی ہلاکت پر مستعفی

تیونس سٹی(مانیٹرنگ ڈیسک) تیونس کے وزیرصحت عبدالروف شریف 24 گھنٹے کے دوران 11 بچوں کی اسپتال میں ہلاکت پر اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق تیونس کے سرکاری رابطہ میٹرنٹی اسپتال میں 24 گھنٹوں کے دوران مجموعی طور پر 11 نوزائیدہ بچے آکسیجن کی کمی کے باعث ہلاک ہوگئے، جس پر وزیرصحت نے ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے استعفیٰ دے دیا۔وزیرصحت عبدالرؤف شریف نے 4 ماہ قبل ہی عہدہ سنبھالا تھا، رابطہ میٹرنٹی اسپتال ریاست کے زیر انتظام چلنے والا ادارہ ہے۔ وزیراعظم یوسف شاہد نے سرکاری ہسپتال میں نوزائیدہ بچوں کی ہلاکت پر تحقیقات کا حکم دے دیا ہے، تحقیقاتی کمیٹی طبی مراکز، اویات اور حفظان صحت کے اقدامات کا جائزہ لے گی۔واضح رہے کہ تیونس طبی سہولیات کے اعتبار سے شمالی افریقہ میں بہترین ملک ہیں تاہم صدر زین العابدین کے 2011 سے سبکدوشی کے بعد سے صحت کے مراکز کو مالی بحران، ادویات کے فقدان اور ایڈمنسٹریشن میں مشکلات کا سامنا ہے۔

تیونس

مزید : پشاورصفحہ آخر