بنگلہ دیش میں احتجاج کے بعد بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا دورہ معطل

  بنگلہ دیش میں احتجاج کے بعد بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا دورہ معطل

  

نئی دہلی(این این آئی) کورونا وائرس کی وجہ سے بنگلہ دیش کے بانی شیخ مجیب الرحمٰن کی پیدائش کی صد سالہ تقریب مجیب بورشو کی معطلی کے بعد نریندر مودی کا بنگلہ دیش کا دورہ بھی معطل کردیا گیا۔خیال رہے کہ گزشتہ چند روز سے نریندر مودی کے بنگلہ دیش کے متوقع دورے پر ڈھاکا میں احتجاجی مظاہرے کیے جارہے تھے۔17 مارچ کو ہونے والی بڑی تقریب کو معطل کرنے کا فیصلہ ڈھاکا میں اعلیٰ سطح کے اجلاس کے دورا لیا گیا۔بھارتی ٹی وی کے مطابق اب یہ تقریب شیخ حسینہ اور ان کی بہت کی موجودگی میں شیخ مجیب الرحمٰن کی جائے پیدائش پر چھوٹے پیمانے پر منعقد کی جائے گی جس میں نریندر مودی کا ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کرنے کا امکان ہے۔بھارت کے وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار کا کہنا تھا کہ 'ہمیں بنگلہ دیش کی حکومت کی جانب سے نوٹی فکیشن ملا ہے کہ عوامی تقریب کو منانے کا فیصلہ بنگلہ دیش میں سامنے آنے والے کورونا وائرس کے کیسز اور عالمی سطح پر عوام کی صحت کے حوالے سے صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے واپس لے لیا گیا ہے۔اس فیصلے کے تحت 17 مارچ کو بڑا اجتماع منعقد نہیں کیا جائے گا جس میں بھارتی وزیر اعظم نریندر کو مدعو کیا گیا تھا۔بنگلہ دیش نے تجویز دی کہ اس تقریب کے لیے نئی تاریخیں بعد ازاں جاری کی جائیں گی۔تقریب کے لیے قائم کمیٹی کے چیف کو آرڈینیٹر کمال عبدالنصیر چوہدری کا کہنا تھا کہ مجیب بورشو (مجیب کا سال) کے نام سے اس تقریب کا آغاز ڈھاکا کے نیشنل پیریڈ گراؤنڈ میں 17 مارچ کو ہونا تھا جو پورے سال جاری رہتا تاہم، اسے فی الحال کے لیے معطل کردیا گیا۔مظاہرین نے بھارت میں مسلمانوں پر ہونے والے مظالم کے پیش نظر نریندر مودی کے دورے کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مودی مسلمانوں کا قاتل ہے مظاہرے کے منتظم نور حسین قاسمی کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش میں کئی نسلوں سے فرقہ وارانہ ہم آہنگی ہے اس لیے ہمیں کسی ایسے رہنما کا دورہ قبول نہیں جو شدت پسند اور فرقہ واریت کا پرچار کرنے والا ہو۔

مودی دورہ

مزید :

صفحہ اول -