قتل کی4وارداتوں میں ملوث 8ملزم گرفتار،انویسٹی گیشن پولیس

قتل کی4وارداتوں میں ملوث 8ملزم گرفتار،انویسٹی گیشن پولیس

  

لاہور(کرائم رپورٹر) لاہور انویسٹی گیشن پولیس کی مختلف ٹیموں نے کارروائیاں کرتے ہوئے قتل کی4 سنگین وارداتوں کو ٹریس کر کے اس میں ملوث 8 ملزمان کوگرفتارکر لیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹرانعام وحید خان نے انویسٹی گیشن کی سپیشل ٹیموں کوقتل اور اندھے قتل کی وارداتوں میں ملوث ملزمان کی فوری گرفتاری کا خصوصی ٹاسک دیا۔ایس پی سٹی انویسٹی توحید الرحمن میمن کی سربراہی میں سٹی ڈویژن کی مختلف پولیس ٹیموں نے قتل اور اندھے قتل کی4 وارداتوں کو ٹریس کر کے8 خطرناک ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔ انویسٹی گیشن پولیس شادباغ نے کارروائی کرتے ہوئے مختلف معلومات سمیت جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے ہیڈ کانسٹیبل محمد فاروق کو قتل کرنے سمیت ڈکیتی کی وارداتوں میں ملوث 2اشتہاری ڈاکوؤں نذیر عرف جیرو اور اس کا ساتھی نعمان کو گرفتارکر لیا ہے،ملزم نذیر نے ڈیڑھ ماہ قبل معمولی رنجش پر اپنے بھائی کے گھر میں گھس کر اندھا دھند فائرنگ کر دی تھی جس سے ہیڈ کانسٹیبل محمد فاروق موقع پر جاں بحق جبکہ ملزم کا سگا بھائی منیرشدید زخمی ہو گیا تھا۔

ملزم نذیر عرف جیرو قتل اور اقدام قتل کی واردات میں لاہور پولیس کو مطلوب تھا۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ ملزمان ڈکیتی اور راہزنی کی درجنوں وارداتوں میں مزاحمت پر شہریوں کو زخمی بھی کر چکے ہیں۔ ملزمان کی نشاندہی پر2لاکھ روپے نقدی، 5 موٹر سائیکلیں،موبائل فونز اورناجائز آتشیں اسلحہ بھی برآمد کر لیا ہے۔اسی طرح انویسٹی گیشن پولیس بادامی باغ نے اپنے جگری دوست وحید اختر کو قتل کرنے والے سفاک ملزم آصف کو گرفتارکر لیا ہے۔ ملزم آصف نے میچ پر بھاری جواء ہارنے پرو حید اختر کو قتل کر دیا تھا۔ملزم آصف بہانے سے مقتول کی موٹر سائیکل پر اس کے پیچھے بیٹھا اور ویرانے میں لے گیا بعد ازاں مقتول وحید اختر کی گردن میں فائر مار کر قتل کیا اور موقع سے فرار ہو گیا۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ ملزم آصف جعلی پیر بن کر لوگوں سے پیسے بٹورنے کے گھناؤنے کاروبار میں بھی ملوث ہے۔ انویسٹی گیشن پولیس شاہدرہ ٹاؤن نے کارروائی کرتے ہوئے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے شہری محمد سلیم کے اندھے قتل کی واردات کو ٹریس کر کے اپنے مالک کو قتل کرنے والے سفا ک ملزم نذر حسین کو گرفتارکر لیا ہے۔ملزم نظر حسین اپنے مالک محمد سلیم کی سابقہ بیوی سے شادی کرنا چاہتا تھا جو قتل کی وجہ بنا۔ملزم نظر حسین نے اپنے مالک مقتول محمد سلیم کو اپنے کمرے میں بلا کر نشہ آور چیز کھلا ئی اور گلا دبا کر قتل کر دیا تھا۔ ملزم نے مقتول کی نعش کو قتل کے2دن بعد تھیلے میں ڈال کر شاہدرہ موڑ جنگل میں پھینک دیا تھا۔ اسی طرح انویسٹی گیشن پولیس بھاٹی گیٹ نے اپنے سابقہ شوہر ملک خلیل احمد کو قتل کرنے والی دوسری بیوی ملزمہ نادیہ بی بی کو3 ساتھیوں بھائی عمران سبحانی اور مقتول کے سگے بھتیجوں محسن اور حسن کو گرفتار کر لیا ہے۔ ملزمان نے ملک خلیل پرآہنی راڈ سے شدید تشدد کیا جس سے مقتول ملک خلیل احمد 2 روز ہسپتال میں رہنے کے بعد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جانبحق ہو گیا تھا۔ ملزمہ نے بلیک میل کر کے ماہانہ پیسے وصول کرنے کی رنجش پر اپنے سابقہ شوہر کو قتل کر دیا تھا۔ایس ایس پی انویسٹی گیشن نے قتل کی وارداتوں میں ملوث ملزمان کی گرفتاری پرپولیس ٹیمز کے لیے تعریفی اسناد کا اعلان کیا ہے۔

مزید :

علاقائی -