گلہار سانحہ کے بعد بھی غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ نہ تھم سکا

گلہار سانحہ کے بعد بھی غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ نہ تھم سکا

  

کراچی (رپورٹ/ندیم آرائیں)گلبہار سانحہ کے بعد بھی غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ نہ تھم سکا،40، 60،80گز پر5سے7منزلہ غیر قانونی تعمیرات گلبہار کے علاقے میں تیزی سے جاری،ایس بی سی اے افسران آج بھی انسانی جانوں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے بھاری نذرانے لے کر تعمیرات کی اجازت دے رہے ہیں،علاقہ میکین بلڈر مافیا کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے،جہاں جہاں غیر قانونی تعمیرات ہورہی ہیں ان کی دیواروں پر غیر قانونی تعمیرات نامنظور کے نعرے درج کردیے،پورے علاقے میں غیر قانونی تعمیرات کے خلاف بینرز آویزاں۔ تفصیلات کے مطابق پلاٹ نمبر 104/4چار سو کوارٹر گلبہار لیاقت آباد تاؤن،پلاٹ نمبر 108/2سو کوارٹر گلبہار لیاقت آباد ٹاؤن،پلاٹ نمبر 142/Bگلبہار نمبر1گولیمار لیاقت آباد ٹاؤن اور سیکٹروں پلاٹوں پر غیر قانونی تعمیرات جاری ہیں جبکہ گلبار کے علاقے میں عید گاہ میدان کے پاس ایک غیر قانونی پلاٹ پر غیر قانونی تعمیرات جاری ہیں،پلاٹ پر غیر قانونی تعمیرات کی وجہ سے اہل محلہ اذیت کا شکار ہیں کیوں کہ بلڈر نے غیر قانونی پلاٹ پر قبضہ کرکے مصروف گلی کو بھی تنگ کردیا ہے جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کاو آنے جانے میں پریشانی کا سامنا ہے،اہل محلہ نے ایس بی سی اے کے افسران کے نام درخواست بھی دے دی ہے مگر درخواست پر ابھی تک عمدرآمد نہیں ہوسکا،سانحہ گلبہار کی متاثرہ خاتون نے روزنامہ پاکستان کو بتایا کہ ہمارا پورا سامان غائب کردیا گیا ہے 30لاکھ کے پرائز بونڈ? اور طلائی زیورات کا کچھ پتا نہیں چل رہا،ہمیں نہیں پتا کہ ہمارا سامان کہاں ہےِ انہوں نے کہا کہ کہ بلڈرر کو گرفتار کیا جائے اور ہمیں ہمارے مکان تعمیہر کرکے دیے جائیں،ہمارا سارا سامان واپس کیاجائے،گلبہار کے علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے راشی افسران سانحہ گلبہارواقعہ کے ذمہ دار ہیں،لیکن آج بھی بجائے اس واقع کے بعد شرمسار ہونے کے ایس بی سی اے کے کرپٹ افسران اور علاقہ ایس ایچ او بھاری نذرانے لے کر غیر قانونی تعمیرات کروارہے ہیں،سانحہ گلبہار کے مکینوں کا خون رائیگاں نہیں جانے دیں گے اس میں ملوث تمام ملزمان کو سزا دلواکر ہی دم لیں گے،علاقہ مکینوں نے مزید کہا کہ ہم روزنامہ پاکستان کے توسط سے وزیر اعظم پاکستان،چیف جسٹس آف پاکستان،آرمی چیف،گورنر سندھ،وزیر اعلیٰ سندھ،وزیر بلدیات،ڈی جی ایس بی سی اے سے اپیل کرتے ہیں کہ گلبہار میں غیر قانونی تعمیرات کے خلاف فوری کارروائی کرتے ہوئے ان میں ملوث تمام عناصر کی انکوائری کرکے انہیں کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔واضح رہے کہ سانحہ گلبہار کے واقعہ میں اب تک 27افراد جانبحق ہوچکے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -