ریکوڈک کیس میں 5 ارب 97 کروڑ ڈالر کا جرمانہ، پاکستان کو فیصلے کیخلاف ابتدائی کامیابی مل گئی

ریکوڈک کیس میں 5 ارب 97 کروڑ ڈالر کا جرمانہ، پاکستان کو فیصلے کیخلاف ابتدائی ...
ریکوڈک کیس میں 5 ارب 97 کروڑ ڈالر کا جرمانہ، پاکستان کو فیصلے کیخلاف ابتدائی کامیابی مل گئی

  

واشنگٹن، اسلام آباد (ویب ڈیسک) عالمی عدالت برائے سرمایہ کاری تنازعات نے ریکوڈک کیس میں عبوری حکم امتناع جاری کردیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق انٹرنیشنل سینٹر فارسیٹلمنٹ آف انوسٹمنٹ ڈسپیوٹس نے ریکوڈک کا معاہدہ منسوخ کرنے کی پاداش میں پاکستان پر 5 ارب 97 کروڑ ڈالر کا جرمانہ عائد کیا تھا، جس پر حکومت پاکستان نے کیس میں عائد جرمانے کو روکنے کے لیے امریکی وفاقی عدالت سے رجوع کیا اور دعوے میں کہا کہ بین الاقوامی ثالثی ٹربیونل نے بین الاقوامی قوانین کو نظر انداز کیا ہے اور نقصانات کا تخمینہ لگانے کیلیے غلط طریقہ کاراپنایا گیا۔

اٹارنی جنرل آفس کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ عالمی عدالت برائے سرمایہ کاری تنازعات ریکوڈک کیس میں عبوری حکم امتناع جاری کرچکی ہے اور عالمی عدالت پاکستان کی نظرثانی درخواست پر سماعت کے لیے ٹربیونل تشکیل دے گی۔

اعلامیے کے مطابق پاکستان کی کوشش ہے کہ نظرثانی درخواست میں پاکستان کے خلاف ہونے والا فیصلہ تبدیل ہوسکے، اٹارنی جنرل کی سربراہی میں پاکستانی وفد نے حال ہی میں لندن کا دورہ کیا جس کا مقصد سماعت سے قبل کی معروضات کو حتمی شکل دینا تھا۔

مزید :

قومی -