وزیراعظم عمران خان نے بھی عورت مارچ کے حوالے سے بیان دے دیا

وزیراعظم عمران خان نے بھی عورت مارچ کے حوالے سے بیان دے دیا
وزیراعظم عمران خان نے بھی عورت مارچ کے حوالے سے بیان دے دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت کو یکساں تعلیمی نظام قائم کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے کیونکہ موجودہ تعلیمی نظام ستر سالوں سے قائم ہے جس کو ختم کرکے ایک تعلیمی نظام لانے کی ضرورت ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ عورت مارچ میں ثقافتی تضاد ابھر کر سامنے آ گیا جو دہرے تدریسی نظام کی عکاسی کرتا ہے۔اسلام آباد میں 20 ہزار گھروں کی تعمیر کے 7 منصوبوں کا سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا سرکاری، نیم سرکاری سکولوں میں پڑھائے جانے والے نصاب کی بدولت ثقافتی تضاد کی خلا گہری ہوتی جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ نجی اسکولوں میں غیرمعمولی فیس دے کر تعلیم حاصل کرکے جب معاشرے کو دیکھتے ہیں تو انہیں بے پناہ خامیاں نظر آتی ہیں جو عورت مارچ کی صورت میں دیکھ سکتے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ آئندہ برس تک وزارت تعلیم تمام سرکاری اور نجی سکولوں کے لیے ایک نصاب پر مشتمل ایک لائحہ عمل پیش کرے گی تاکہ تدریسی اداروں سے ایک قوم ابھرے اور ثقافتی تفریق ختم ہو۔

مزید :

قومی -