بہاولپور: نجی ہاؤسنگ سوسائٹی میں 12ارب کی کرپشن متعلقہ پارٹیاں عدالت طلب 

بہاولپور: نجی ہاؤسنگ سوسائٹی میں 12ارب کی کرپشن متعلقہ پارٹیاں عدالت طلب 

  

بہاولپور (ڈسٹرکٹ رپورٹر) نجی ہاؤسنگ سوسائٹی میں 12 ارب کرپشن میں نیاموڑ آگیا شہری کی رٹ پرہائیکورٹ بہاولپورنے ہاؤسنگ سوسائٹی کے اعلی عہدیداران لینڈ پروائیڈر لینڈاونرکوریکارڈ سمیت29 مارچ کوطلب کرلیا ہے تمام متعلقہ پارٹیوں کونوٹسز موصول ہوگئے عدالت میں الزامات کا سامنا کرنے کے لئے لیگل ایڈوائزروں نے سر جوڑ لئے تفصیل کے مطابق بہاولپورکے رہائشی محمدسردار(بقیہ نمبر1صفحہ 6پر)

کی طرف سے سنیئر قانو ن دان چوہدری محمدریاض نے ہائیکورٹ بہاولپورمیں ر ٹ دائرکرکے عدالت عالیہ سے استدعاکی کہ بہاولپورکی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی جوترقی کی راہ پرگامزن تھی جس میں 12 ارب کی مبینہ کرپشن کاانکشاف ہواہے ہاؤسنگ سوسائٹی کے چندکرپٹ افسران کی ملی بھگت سے لینڈمافیاسے تعلق رکھنے والے محمدظفرراجہ، امجدخاکوانی، مفتی معظم اورخلیل احمدجولینڈپروائیڈر ہیں نے48 ایکڑ رقبہ موضع ہوت والا میں سیکٹرکیلئے دوکروڑ روپے فی ایکڑکے حساب سے جس کی کل قیمت96 کروڑ بنتی ہے محمدبلال، محمدجمال نے خریدکرایک کروڑ روپے مالکا ن کواداکرنے کے بعدرقبے کی نشاندہی ادارے کوکروادی لینڈ مافیا نے ادارے کے آفیشلز کیساتھ دیرنیہ تعلقات کواستعمال کرتے ہوئے کرپشن میں حائل تین پراجیکٹ ڈائریکٹرعہدوں سے ہٹواکران کی جگہ اپنے من پسندجونیئرآفیسر کوتین ماہ کیلئے عارضی طورپرپروجیکٹ ڈائریکٹر لگواکرمبینہ طورپر12 ارب روپے کی کرپشن کوپایہ تکمیل تک پہنچایااور96 کروڑ روپے میں خریدکیے گئے48 ایکڑ12 ارب روپے میں ادارے کودینے کے عوض400 رہائشی فائلز فی کس ایک کنال اور500 کمرشل فائلز چارمرلہ فی کس رقبہ ادارہ کومنتقل ہونے سے پہلے بغیررجسٹری اورایشوڈیٹ ڈالے اپنے نام پرنٹ کرواکرحاصل کرلیں جن پراب ہاتھ سے تاریخ ڈال کر فروخت کیاجارہاہے بعدازاں محمدجمال کی زمین20ایکڑ2کنال 12 مرلے مبلغ8,77,97,902,50 روپے میں مورخہ12 دسمبر2020کوادارے کے نام ٹرانسفر کروالی گئی جوکہ شیڈول ریٹ کے مطابق ظاہرکی گئی اورمحمدبلال کی بقیہ20ایکڑ2 کنال14مرلے 17 دسمبر 2020 کوادارے کے نام پر مبلغ175.649,801,25 روپے میں ادارہ کے نام ٹرانسفرکروائی گئی جبکہ سودامذکورہ بالامبلغ96 کروڑ روپے میں کیاگیاتھااس طرح سٹمپ ڈیوٹی بمع سرکاری واجبات وغیرہ کی مدمیں ہی لاکھوں روپے غبن کیے گئے اور9جنوری2021  کواخبار ات فائلز کی فروخت کیلئے بڑے بڑے اشتہارات جاری کیے جس پرادارہ حرکت میں آگیااورادارے نے عوام الناس کواشتہار دینے والے لینڈمافیا کیساتھ فائلز کی خریدوفروخت سے منع کیاکیونکہ اس سے پہلے بھی ایک سیکنڈل جوتقریبا50کروڑ کاتھاسامنے آیاتھااس سیکنڈل کے ملزمان ابھی تک نیب کی تحویل میں ہیں اس اربوں روپے کے سیکنڈل میں بھی لینڈمافیاادارے کے معاونین کے ذریعے ادارے کونقصان پہنچانے کے درپے ہیں آج تک مذکورہ بالاسوسائٹی کے تمام بلاکس کیلئے6ہزار ایکڑ رقبہ خریدکیاگیاجس میں مین راستوں میں روڈ پر کام جاری ہے اوراس کے عوض کسی ایک بھی مالک اراضی کوکمرشل فائلز نہیں جاری کی گئیں اخباراشتہار میں کمرشل فائل جوکہ4 مرلہ پرمشتمل کی قیمت مبلغ2کرو ڑ روپے اوررہائشی فائلز1کنال کی قیمت50 لاکھ روپے شائع کی گئی ہے ادارہ اگر1200 ایکڑ خرید کرتاتوتب سابقہ روٹین کے مطابق اتنی مالیت کی فائلز پرنٹ ہوتی جوکہ صرف48 ایکڑ رقبہ کی خرید پرپرنٹ کی جاچکی ہیں اوراب فائلز غلط طورپراپنے جاننے والوں کے شناختی کارڈ بغیررقم کی ٹرانزیکشن کے ٹرانسفر کروائی جارہی ہیں نہ تووہاں پراتنارقبہ موجود ہے نہ اتنے پلاٹس بن سکتے ہیں لہذا لینڈمافیااورادارے میں ان کے معاونین کیخلاف فوری کاروائی عمل میں لاتے ہوئے سخت سے سخت سزادی جائے اورفائلز کی ٹرانسفر وخریدوفروخت پرفوری پابندی لگائی جائے جس پرعدالت عالیہ نے ہاسنگ سوسائٹی کے اعلی عہدیداران اورمبینہ کرپشن میں ملوث تمام افراد کوریکارڈ سمیت29 مارچ2021 کوطلب کرلیاہے اورتمام افراد کو طلبی کے نوٹس بھی موصول ہوچکے ہیں اور عدالت عالیہ میں الزامات کا سامنا کرنے کے لئے لیگل ایڈوائزروں تگ ودو شروع کرد ی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -