جنوبی وزیرستان، آپریشنوں سے متاثرہ محسود قبائل کے ہزاروں افراد کا احتجاجی مظاہرہ 

  جنوبی وزیرستان، آپریشنوں سے متاثرہ محسود قبائل کے ہزاروں افراد کا احتجاجی ...

  

  ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان، آپریشنوں سے متاثرہ محسود قبائل کے ہزاروں افراد کا احتجاجی مظاہرہ، حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی تفصیلات کے مطابق آج بروز بدھ گزشتہ آپریشنوں سے متاثرہ محسود قبائل نے ایف سی گراونڈ سے لیکر ٹریفک پوائنٹ تک ایک احتجاجی ریلی نکالی جسمیں ہزاروں کی تعداد میں افراد نے شرکت کی، مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے اور صوبائی حکومت کمشنر ڈیرہ ڈویژن اور ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان کے خلاف شدید نعرہ بازی کی، باب وزیرستان گیٹ کے سامنے احتجاجی مظاہرے سے شاہ فیصل غازی، حاجی تلاوت خان، صدر شمس و دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی وزیرستان کے متاثرہ علاقوں کے 50 ہزار سے زیادہ سروے پیڈنسی کے علاوہ ہزاروں کی تعداد میں سیم پیکچرز کیسزز کی فائلیں جنوبی وزیرستان انظامیہ اور سی پی ایل سی ڈیپارٹمنٹ کے دفتروں میں گزشتہ کئی سالوں سے التوا کی شکار ہوکر پڑی ہیں اور تاحال اس پر کوئی عملدرآمد نہیں ہوا ہے، مقررین کا کہنا تھا کہ جنوبی وزیرستان میں شدید سردی اور برف بھاری سے لوگ بے سروسامانی کی زندگیاں گزار رہے ہیں، اور حالیہ بارشوں کی وجہ سے آپریشنوں سے خستہ حال متاثرہ مکانات منہدم ہورہے ہیں جس سے متاثرین کی زندگیاں عذاب میں مبتلا ہو چکی ہیں، مقررین کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت بین الاقوامی ڈونرز کی جانب سے دی گئی امداد میں مشکلات پیدا کرکے متاثرین کیلئے آئی ہوئی رقم بینک اکاؤنٹس میں رکھ کر اس پر منافع کما رہے ہیں، ان کا کہنا تھا کہ متاثرہ گھروں کے جاری سروے میں کمشنر آفس سے لیکر ڈپٹی کمشنر اور ان کے افس کا ماتحت عملہ لوٹ مار میں ملوث ہے، مقررین نے سروے کی مد میں ہونے والی بدعنوانیوں کی جوڈیشل انکوائری تشکیل دینے کا مطالبہ کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -