ہائر ایجوکیشن کمیشن‘ یونیورسٹیز میں نئی انڈر  گریجوایٹ پالیسی نافذ‘ انٹرن شپ لازمی قرار

ہائر ایجوکیشن کمیشن‘ یونیورسٹیز میں نئی انڈر  گریجوایٹ پالیسی نافذ‘ انٹرن ...

  

 ملتان (جنرل ر پو رٹر)طلباء کی موجیں ختم ہوگئیں، اب سمسٹر کے کورسز پاس کیے بغیر پروموشن نہیں ہوگی، بی ایس آنرز (بقیہ نمبر4صفحہ 6پر)

میں جنرل ایجوکیشن کے 13 مضامین 2سال میں پاس کرنے کی شرط عائد ہوگئی، ہر طالب علم کو انٹرن شپ لازمی کرنا ہوگی۔تفصیلات کے مطابق ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے یونیورسٹیز میں نئی انڈر گریجویٹ پالیسی نافذ کر دی گئی ہے، بی ایس آنرز میں جنرل ایجوکیشن کے 13 مضامین 2سال میں پاس کرنے کی شرط عائد کی گئی ہے، پہلے چار سمسٹرز میں جنرل ایجوکیشن کے مضامین پاس نہ کرنے والے طلباء کی پروموشن پر پاپندی عائد کر دی گئی ہے۔بی ایس آنرز کی ڈگری مکمل کرنے کے لئے انٹرن شپ لازمی قرار دی گئی ہے، ایچ ای سی نے بی ایس آنرز ڈگریوں کو پانچ درجات میں تقسیم کر دیا ہے، پہلی کیٹیگری میں آرٹس اینڈ سائنس، دوسری چار سالہ پروفیشنل ڈگری، تیسری کیٹیگری پانچ سالہ پروفیشنل ڈگری، چوتھی کیٹیگری میں کونسلز کی منظور شدہ ڈگریاں جبکہ پانچویں کیٹیگری میں 2سالہ ایسوسی ایٹ ڈگری کو شامل کیا گیا ہے۔چار سالہ بی ایس آنرز ڈگری میں کم از کم 40 مضامین پڑھنے کی شرط عائد ہے، بی ایس آنرز میں پہلا حصہ جنرل ایجوکیشن، دوسرا متعلقہ ڈسپلن اور تیسرا پریکٹیکل لرننگ پر مشتمل ہوگا، آرٹس اینڈ ہیومینیٹیز، نیچرل سائنس اور سوشل سائنسز میں سے دو مضامین لازمی پڑھنا ہوں گے، سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں میں بی ایس آنرز میں داخلے نئی پالیسی کے تحت ہوں گے۔

قرار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -