اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے سینیٹر یوسف رضا گیلانی کی نا اہلی سے متعلق اپیل مسترد کیے جانے کے بعد رمیض راجہ برہم ہوگئے ،فیصلے پر تنقید 

اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے سینیٹر یوسف رضا گیلانی کی نا اہلی سے متعلق ...
اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے سینیٹر یوسف رضا گیلانی کی نا اہلی سے متعلق اپیل مسترد کیے جانے کے بعد رمیض راجہ برہم ہوگئے ،فیصلے پر تنقید 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے سینیٹر یوسف رضا گیلانی کی نا اہلی سے متعلق درخواست مسترد کیے جانے کے بعد سابق کرکٹر رمیض راجہ نے فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنا ڈالا ۔

ایک ویڈیو پیغام میں انہوں نے کہا کہ میں کچھ کام کر رہا تھا اچانک مجھے خبر ملی کہ ہائیکورٹ نے سینیٹ الیکشن میں ہونے والے فراڈ اور پیسوں کی لین دین سے متعلق فیصلے میں کہا ہے کہ پیسے لینے اور دینے والے لوگ برے ہیں اور یہ اخلاقیات کا معاملہ ہے ،ہم اس پر فیصلہ نہیں دے سکتے ۔رمیض راجہ نے کہا کہ اگر ملک کے انصاف کے ادارے اخلاقیات پر فیصلہ نہیں دیں گے تو پھر کون دے گا ۔ان کا کہنا تھا کہ بد قسمتی سے ہمارا معاشرہ مہذب نہیں رہا ،یہاں خاندانی ،باکردار اور دیانتدار رہنما وں کی کوئی بات نہیں کرتا ،یہ معاشرہ چوروں کو تحفظ دیتا ہے ۔سابق کرکٹر نے مزید کہا کہ پاکستان کی یہ ہی سب سے بڑی خرابی ہے ،اگر ملک کے بڑے ادارے اخلاقیات پر فیصلہ نہیں دے سکتے تو کیا اوپر سے فرشتے آئیں گے اخلاقیات پر فیصلہ کرنے کے لیے ۔

مزید :

کھیل -