کسان تنظیموں کے مالی امور میں شفافیت لانے کیلئے آڈٹ شروع

کسان تنظیموں کے مالی امور میں شفافیت لانے کیلئے آڈٹ شروع

لاہور(خبر نگار)صوبائی وزیر آبپاشی وچیئرمین پیڈا میاں یاور زمان نے کہا ہے کہ کسان تنظیموں کے مالی امور میں شفافیت لانے کے لئے آڈٹ کے عمل کا آغاز کر دیاگیا ہے۔اس حوالے سے تکنیکی لحاظ سے مستند آڈٹ فرموں سے اظہار دلچسپی کی پیشکشیں وصول کرلی گئی ہیں۔یہ بات انہوں نے آج اپنی رہائشگاہ پر لوئر باری دوآب کینال کی کسان تنظیموں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ وفد کی قیادت لوئر باری دوآب کینال ایریا واٹر بورڈ کے چیئرمین سردار ٹیپو عثمان خان کررہے تھے۔صوبائی وزیر آبپاشی میاں یاور زمان نے کسانوں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ادارہ جاتی اصلاحات پروگرام کے تحت کسان تنظیمیں اپنی راجباہوں پر کئے جانے والے ترقیاتی اخراجات میں خود مختار ہیں جنہیں باقاعدہ قواعد وضوابط کے تحت مالی ذمہ داریاں سونپی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ تنظیموں کو مالی امور میں مہارت دینے کیلئے پیڈا کی جانب سے باقاعدہ تربیتی پروگرام لانچ کئے جاتے ہیں ،تاہم قواعد وضوابط کے مطابق حکومتی وسائل کا آڈٹ کروانا لازمی عنصر ہے جس کے لئے پیڈانے تکنیکی لحاظ سے مستند آڈٹ فرموں سے اظہار دلچسپی کی پیشکشیں وصول کر لی ہیں۔

اور کسی ایک آڈٹ فرم کے ساتھ باقاعدہ معاہدہ کے تحت کسانوں تنظیموں کے آڈٹ کا آغاز ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آڈٹ کی بنیادپر پیڈا کے مالیاتی امور میں بہتری آئے گی اور کسان تنظیموں کے کمزورپہلوؤں کو بھی بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔صوبائی وزیرآبپاشی نے مزید کہا کہ نہری پانی کی مساویانہ تقسیم اور ٹیلوں تک ترسیل کے ساتھ ساتھ آبیانہ کی وصولی میں کسانوں تنظیموں کو اہم ذمہ داریاں دی گئی ہیں،ان اصلاحات پر موثر عملدرآمد سے کسان برادری کو سانجھے نہری نظام سر بھرپور فائدہ پہنچے گا۔اس طرح زرعی پیداوار بھی بڑھے گی اور ملک کو غذائی خود کفالت کے حصول میں مدد ملے گی۔

مزید : کامرس