آج سے چار روزہ احتجاجی تحریک شروع اور دمادم مست قلندر ہو گا

آج سے چار روزہ احتجاجی تحریک شروع اور دمادم مست قلندر ہو گا

 لاہور( لیاقت کھرل) واپڈا کی ڈسٹی بیوشن کمپنیوں اور بالخصوص ملک کی سب سے بڑی منافع بخش ، اپنے صارفین کو سستی اوربجلی کی بہتر سپلائی فراہم کرنے والی لیسکو الیکٹرک سپلائی کمپنی کی نجکاری ہرگز نہیں ہونے دیں گے۔ آج 11 مئی کو لیسکو کمپنی کا تحفظ کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار واپڈا ہائیڈرو لیبر یونین کے مرکزی ، صوبائی اور ریجنل عہدیداروں نے ’’پاکستان فورم‘‘ میں کیا ہے۔ اس موقع پر واپڈا ہائیڈرو لیبر یونین کے سیکرٹری جنرل اور بزرگ مزدور رہنما خورشید احمد خان نے کہا کہ یہاں الٹی گنگا بہہ رہی ہے ۔ عوام کے پیسوں سے بنے ہوئے اداروں کو اپنے دوستوں کو دینے کی ایک سازش ہے، اس کو پرائیویٹ کرنے سے حکومت کو اربوں روپے تو حاصل ہوں گے لیکن عوام بجلی کے بلب کی روشنی تک کو ترس کر رہ جائیں گے۔ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کی نجکاری سے پاور کمپنیوں کی کارکردگی میں بہتری نہیں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ لیسکو پہلے ہی عوام کو سستی بجلی اور اپنے صارفین کو فائدہ پہنچا رہی ہے۔ حکومت کو سالانہ اربوں روپے سالانہ کما کر دے رہی ہے ایسا کیا گیا تو لیسکو کا حال بھی کراچی الیکٹرک سپلائی کمپنی جیسا ہو گا۔ اس موقع پر عبدالطیف نظامانی اور حاجی محمد رمضان نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی جب بھی حکومت آتی ہے کسی نہ کسی ادارے کی نجکاری کر دی جاتی ہے۔ پی ٹی سی ایل سمیت متعدد بڑے اور مالیاتی اداروں کو اونے پونے فروخت کیا گیا ہے ۔ اب حکومت نے واپڈا کی ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کی نجکاری کی جا رہی ہے اور اس میں سب سے پہلے ملک کی سب سے بڑی لیسکو ڈسٹری بیوشن کمپنی کو پرائیویٹ کیا جا رہا ہے ۔ اس موقع پر ایڈیشنل سیکرٹری جنرل نے کہا کہ حکومت یہ ڈھونگ رچا رہی ہے اور عوام کو گمراہ کر رہی ہے۔ اس موقع پر ساجدکاظمی اور رانا عبدالشکور نے کہا کہ حکومت نے فیصلہ واپس نہ لیا تو پھر دما دم مست قلندر ہو گا۔ کسی بھی صورت میں ہائیڈرو کارکن سکون سے نہیں بیٹھیں گے۔ حکومتی ایوان کا گھیراؤ کریں گے ۔ پنجاب اسمبلی ، گورنر ہاؤس اور ایوان وزیر اعلیٰ کی پہلے مرحلہ میں اور دوسرے مرحلہ میں ماڈل ٹاؤن اور جاتی عمرہ اور جی او آر جیسے اہم مقامات کی بجلی بند کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ آج 11 مئی سے چار رو ز کے لئے احتجاجی تحریک شروع اور دما دم مست قلندر ہو گا اور لیسکو کے تمام دفاتر کو بند رکھا جائے گا اور تمام ملازمین لیسکو ہیڈ کوارٹر کے سامنے موجود ہوں گے اور احتجاجی دھرنا دیا جائے گا۔ اس میں 11 مئی سے 15 مئی تک لیسکوکو بچانے کے لئے لیسکو ہیڈ کوارٹر کوارٹر کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا جائے گا اور اس میں مزدور اتحاد کامیاب ہو گا۔ لیسکو کو خریدنے کے لئے آنے والے غیر ملکیوں کو لیسکو ہیڈ کوارٹر کے اندر گھسنے نہیں دیا جائے گا۔ اس موقع پر حاجی محمد یونس، شفقت جاوید اور ملک محمد اکبر نے کہا کہ واپڈا کے سینکڑوں ملازمین ہر سال اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتے ہیں۔ اس میں صارفین کو بجلی کی سپلائی کو ممکن بنانے اور بجلی چوری کے خلاف آپریشن کے دوران فائرنگ جیسے واقعات سے واپڈا ملازمین اپنی جانوں کے نذرانے پیش کر چکے ہیں۔ اس موقع پر محمود بٹ، حاجی محمد یونس نے کہا کہ حکومت کا فرض ہے کہ 18 کروڑ عوام کی بنیادی ضروریات کو پورا کرے اس میں عوام کی فلاح اور عوام کے گھروں میں روشنی اور گھروں کے چولہے آباد کرنے والے اداروں کی کارکردگی کو سراہائے، بلکہ حکومت انہیں تباہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا ہرگز نہیں کرنے دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ واپڈا ہائیڈرو کے کارکنوں کو 11 مئی سے پہلے گرفتار کیا گیا تو انہیں روکا جائے گاور اس میں حکومت کے کسی غیر آئینی فیصلہ کے خلاف ملک گیر احتجاجی تحریک چلائی جائے گی۔ حکومت کو چاہیے کہ واپڈا کے کارکنوں اور واپڈا کے انجینئروں سے ٹیبل ٹاک کرے ۔ اس موقع پرساجد کاظمی نے مزید کہا کہ جن جن اداروں کی نجکاری ہوئی ہے وہاں بڑے پیمانے پر بے روزگاری پھیلی ہے ،مظفر معین، چودھری محمد ریاض، محمد اقبال گجر، حاجی محمد مختار نے نے بھی اظہارِ خیال کیا۔

مزید : علاقائی