داعش کا خطرہ ،پورے امریکہ میں سکیورٹی کی سطح بڑھانے کا فیصلہ

داعش کا خطرہ ،پورے امریکہ میں سکیورٹی کی سطح بڑھانے کا فیصلہ

واشنگٹن(اظہر زمان، بیورو چیف)داعش کے ساتھ مشرق وسطی میں امریکہ کا جو محاذ کھلا ہے اس کی حرارت اب امریکہ کی اپنی حدود میں محسوس ہو رہی ہے ۔پینٹاگون نے پورے ملک میں فوجی اڈوں پر سکیورٹی کی سطح بڑھا دی ہے ۔ اس دوران ایف بی آئی نے خبردار کیا ہے کہ داعش سوشل میڈیا کے ذریعے امریکی شہریوں اور خصوصاََ مسلمانوں سے حمایت حاصل کرنے کے لئے کوشش کر رہا ہے اور سینکڑوں پیغام بھیجے جا رہے ہیں ۔ ایف بی آئی نے کھل کر یہ تسلیم نہیں کیا لیکن سکیورٹی تجزیہ کاروں کو یقین ہے کہ ایف بی آئی امریکی مسلمانوں کی سرگرم سیاسی اور مذہبی تنظیموں اور ان کے اہم کارکنوں پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ اس دوران اوہائیو ریاست میں سنسناٹی کے شہر میں ایک بیس سالہ نو مسلم شہری کرسٹو فر کارنیل پر مقدمہ چلانے کی جو تیاری ہورہی ہے اس سلسلے میں اس پر ایک اور جرم عائد کر دیا گیا ہے اس نے تسلیم کیا تھا کہ وہ کیپیٹل ہل پر حملہ کر کے مقننہ کے ارکان کو ہلاک کرنا چاہتا تھا اس نے اس کارروائی کیلئے آتش گیر سامان خریدا تھا لیکن اپنے منصوبے پر عملدرآمد سے پہلے پکڑ لیا گیا ۔ ایف بی آئی نے اس پر نئی فرد جرم عائد کی ہے جس کے مطابق وہ داعش کا ہمدرد اورساتھی ہے اور اس کے مقاصد کو آگے بڑھانے کیلئے دہشتگرد کارروائی کرنا چاہتا تھا ۔یہ اعلان ایف بی آئی کے ڈائریکٹر جیمز کومی نے گذشتہ شام ایک خصوصی بریفنگ میں کہاہے ۔داعش کے سوشل میڈیا پر مسلسل منفی پراپیگنڈے کا اب امریکی حکومت نے اسی میڈیا پر جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے امریکی حکومت نے عربی ، اردو اور صومالی سپیکرز پر مشتمل یوٹیوب پر ایک ویڈیو جاری کی ہے امریکی حکام کا کہنا ہے کہ دہشتگرد تنظیموں کی طرف سے سوشل میڈیا پر یک طرفہ پراپیگنڈے کو خموشی سے برداشت نہیں کیا جا سکتا اس لئے اس کا جواب دینا بہت ضروری ہے ۔پینٹاگون کے ترجمان کرنل سٹیو وارن نے وضاحت کی ہے کہ امریکی ریاستوں میں فوجی اڈوں کی سکیورٹی کی موجودہ سطح بڑھا دی گئی ہے جو درمیانی سطح کی سکیورٹی الرٹ ہے ۔

مزید : صفحہ اول