تاجک حکومت کا بچوں کے عربی نام رکھنے پر پابندی لگانے کا فیصلہ

تاجک حکومت کا بچوں کے عربی نام رکھنے پر پابندی لگانے کا فیصلہ

 دوشانبے (نیوز ڈیسک) مردوں سے داڑھیاں شیو کروانے اور خواتین کی جانب سے حجاب کے استعمال پر پابندی کے بعد تاجک حکومت نے مقامی افراد پر بچوں کے عربی نام رکھنے پر بھی پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق تاجک صدر ’امومالی راحمون‘ نے پارلیمنٹ سے کہا ہے کہ تاجک بچوں کے عربی یا عربوں جیسے نام رکھنے پر پابندی کیلئے بل منظور کیا جائے۔ تاجک حکام کے مطابق قانونی تقاضے مکمل ہونے پر ایسے نام جو مقامی ثقافت کے مطابق نہیں ہیں، رجسٹر نہیں کروائے جاسکے گیں۔ چند اراکین پارلیمنٹ کی جانب سے یہ مطالبہ بھی کیا گیا ہے کہ یہ پابندی صرف نومولود بچوں نہیں بلکہ ان شہریوں پر بھی عائد کی جائے جن کے نام عربی ہیں، انہیں اپنے نام تبدیل کرنے کی ہدایت کی جائے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ تاجکستان کی 90 فیصد آبادی مسلمان ہے تاہم سیکولر حکومت کا دعویٰ ہے کہ شہریوں کو انتہا پسندی سے بچانے کیلئے یہ اقدامات کئے جارہے ہیں۔

مزید : علاقائی