نئی دہلی،لینڈنگ سے پہلے پائلٹ کی طبیعت خراب،پھر کیا ہوا؟

نئی دہلی،لینڈنگ سے پہلے پائلٹ کی طبیعت خراب،پھر کیا ہوا؟

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بنکاک سے نئی دہلی آنے والے طیارے کے 200مسافروں کی زندگیاں اس وقت داؤ پر لگ گئیں جب سینئر پائلٹ دوران پرواز اچانک مفلوج ہو گیا اور معاون پائلٹ سمیر ملہوترا کو مجبوراً یمرجنسی کا اعلان کرنا پڑا۔ معاون پائلٹ نے اعلان کیا کہ وہ اکیلا طیارے کو زمین پر نہیں اتار سکتا اور یہ سن کر تمام مسافروں کے اوسان خطا ہو گئے۔ معاون پائلٹ نہیں جانتا تھا کہ اس کے مسافروں میں کسی دوسری فضائی کمپنی کا ایک پائلٹ بھی سفر کر رہا ہے ۔اس پائلٹ نے طیارے کو نئی دہلی میں اتارنے میں معاون پائلٹ کی مدد کی اور طیارہ بحفاظت اتار لیا گیا۔ سینئر پائلٹ کیپٹن رجنیش ملہوترا کو طیارے میں موجود ڈاکٹر نے طبی امداد دی تاہم یہ واضح نہیں ہو سکا کہ اس کی طبیعت اچانک کیوں خراب ہوئی۔فضائی کمپنی کے ترجمان نے بتایا کہ معاون پائلٹ نے ایمرجنسی کا نفاذ کمپنی پالیسی کے تحت کیا، کمپنی اپنے ٹریننگ پروگرام میں پائلٹس کو ایسی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کی مکمل تربیت دیتی ہے۔ترجمان نے تصدیق کی کہ دوسری فضائی کمپنی کے پائلٹ نے طیارہ اندرا گاندھی ائیر پورٹ پر اتارنے میں ہمارے معاون پائلٹ کی مدد کی۔

مزید : علاقائی