شمالی وزیرستان ‘ پہاڑی کی ملکیت پر خونریز تصادم جاری ‘ ہلاکتوں کی تعداد 60سے تجاوز کر گئی

شمالی وزیرستان ‘ پہاڑی کی ملکیت پر خونریز تصادم جاری ‘ ہلاکتوں کی تعداد 60سے ...

میران شاہ(اے این این) شمالی وزیرستان میں پہاڑی کی ملکیت پر شروع ہونے والی لڑائی تیسرے روز بھی جاری،ہلاکتوں کی تعداد60سے تجاوز کر گئیں،درجنوں زخمی،متحارب گروپوں کے درمیان متعدد جرگے ناکام،پولیٹیکل انتظامیہ بے بس ہو گئی،زخمیوں کو علاج کے لئے افغانستان منتقل کئے جانے کی اطلاعات۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ جمعہ کو شمالی وزیرستان کے دو قبائل پیپالی کابل خیل اور مدہ خیل کے درمیان لڑائی تیسرے روز بھی جاری رہی جس میں دونوں طرف سے ہلاکتوں کی تعداد60سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔متحارب گروپوں میں یہ لڑائی ایک پہاڑی کی ملکیت کے تنازعہ پر شروع ہو ئی تھی۔دونوں گروپوں کے درمیان گزشتہ تین سال سے یہ تنازعہ جاری ہے جس پر کئی بار لڑائی ہو چکی ہے اور متعدد جرگے بھی ناکام ہو ئے ہیں ۔پولیٹیکل انتظامیہ بھی بے بس ہو کر رہ گئی ہے۔اس علاقے میں کئی امن جرگوں کے رہنما آپریشن ضرب عضب کے باعث خیبر پختونخوا منتقل ہو چکے ہیں جس کے باعث حالات خراب ہو ئے ہیں۔ذرائع کے مطابق25زخمیوں کو علاج کے لئے افغانستان منتقل کر دیا گیا اور علاقے میں دونوں گروپ آمنے سامنے ہیں۔متحارب گروپ بھاری اور خودکار ہتھیاروں کا بے دریغ استعمال کر رہے ہیں۔علاقے میں معمولات زندگی درہم برہم ،خواتین اور بچے گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔

مزید : علاقائی