پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے زیر اہتمام تربیتی سیمینار

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے زیر اہتمام تربیتی سیمینار

لاہور ( وقائع نگار) شہباز شریف پنجاب میں پختونوں کو دیوار کے ساتھ لگانے کی کوشش کرنے والی بیوروکریسی کے خلاف کارروائی کریں شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کا حصول ہمارا آئینی حق ہے جو پنجاب میں ہمیں نہیں مل رہا ۔ لاہور، فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں جو کارخانے چل رہے ہیں اس میں ہمارے صوبے سے نکلی ہوئی گیس کے مرہون منت ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل سابق سینیٹر عبدالرؤف خان نے بند روڈ لاہور میں ضلع لاہور کے زیر اہتمام تربیتی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ سیمینار میں جنوبی پختونخواہ کے صدر سینیٹر عثمان خان کاکڑ ، سینیٹر سرداراعظم خان موسیٰ خیل ، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی پنجاب کے رہنما مبین خان مہمند ، مومن خان مہمند ، یوسف خان ، مرزا خان سلیمان خیل مہمند سمیت دیگر رہنماؤں نے بھی خطاب کیا ۔ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل سابق سینیٹر عبدالرؤف خان نے اپنے خطاب میں کہا کہ اب ہم پنجاب میں زیادتیاں برداشت نہیں کریں گے ۔

پولیس کو حکم دیا گیا ہے کہ روزانہ پچاس پختونوں کو گرفتار کروپکڑے کئے پٹھانوں سے پولیس رشوت لیتی ہے اور رشوت نہ دینے والے کو دہشت گرد قرار دے کر مقدمات درج کرلئے جاتے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب میں شہباز شریف اور گورنر پنجاب رفیق رجوانہ نوٹس لیتے ہوئے پنجاب میں زیادتیوں کا اژالہ کریں ۔ انہوں نے کہا کہ پختون محب وطن قوم ہیں ہم ہر قسم کی دہشت گردی کے خلاف ہیں ہماری ساڑھے چھ ہزار سالہ تاریخ ہے انگریزوں سے لڑائی کر کے خطے سے بھگانے میں ہمارے اکابرین کا ہاتھ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف پنجاب میں پختونوں کو دیوار کے ساتھ لگانے کی کوشش کرنے والی بیوروکریسی کے خلاف کارروائی کریں شناختی کارڈ کے لئے لاتعداد شرطیں رکھی گئی ہیں پنجاب میں جب بچہ اٹھارہ سال کا ہو جائے تو اس کا شناختی کارڈ بن جاتا ہے جو روزی روٹی کمانے کے لئے دوسرے صوبوں سے آنے والے پختونوں کے بچے اس سہولت سے محروم ہیں ۔ شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کا حصول ہمارا آئینی حق ہے جو پنجاب میں ہمیں نہیں مل رہا ۔ لاہور، فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں جو کارخانے چل رہے ہیں اس میں ہمارے صوبے سے نکلی ہوئی گیس کے مرہون منت ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں پنجابیوں کے ساتھ کی جانے والی زیادتیوں کے خلاف صرف ہماری پارٹی بات کرتی ہے جس کی ہمیں اتنی سزا نہ دی جائے ہمارے صوبے میں چیف سیکرٹری ، ڈی سی او اور کئی اہم شعبوں کے سربراہ پنجابی ہیں ہم نے تو کبھی ان کے خلاف بات نہیں کی پھر پنجاب میں ہمارے ساتھ زیادتیاں کیوں ہو رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ زیادتیوں کا سلسلہ بند نہ ہوا تو پھر لاہور کی سڑکوں پر احتجاج اپنی قیادت میں کرائیں گے

مزید : میٹروپولیٹن 4