ریلوے حادثہ۔۔۔بم برآمد اور حفاظتی انتظامات؟

ریلوے حادثہ۔۔۔بم برآمد اور حفاظتی انتظامات؟

خبروں کے مطابق ٹنڈو جام کے قریب ریلوے لائن کو دھماکہ سے اُڑا دیا گیا، جس کی وجہ سے مال بردار گاڑی پٹڑی سے اُتر گئی اور اسے نقصان پہنچا، شکر ہے کہ جانی نقصان نہیں ہوا، ڈرائیور اور فائر مین کو نکال لیا گیا۔دوسری خبر کے مطابق پولیس نے بہاولپور کے قریب ایک ریلوے پُل کو اُڑانے کی کوشش کو بروقت ناکام بنا دیا اور تخریب کار بھی گرفتار کر لئے گئے، دھماکہ خیز مواد بھی قبضہ میں لے لیا گیا۔ یہ پُل بچ گیا، تاہم ٹنڈو جام کے قریب والی ریلوے لائن اڑ جانے اور گاڑی کے پٹڑی سے اُتر جانے کے باعث گاڑیوں کی آمدو رفت بری طرح متاثر ہوئی۔ جانی نقصان سے تو اللہ نے محفوظ رکھا، لیکن گاڑی، انجن اور پٹڑی کے علاوہ ٹریفک متاثر ہوئی، مسافروں کو بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا، اِس سلسلے میں پولیس کو داد دینا چاہئے کہ بہاولپور پُل کو بروقت بچا لیا گیا اور ملزم بھی گرفتار ہو گئے۔ یہ واقعات یا حادثات اپنی جگہ قابل مذمت تو ضرور ہیں، لیکن ہمارے لئے توجہ کا بھی تقاضا کرتے ہیں ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ریلوے نے پٹرولنگ کا جو سلسلہ شروع کیا وہ روک دیا گیا ہے ورنہ ٹنڈو جام والا حادثہ بھی رک سکتا تھا کہ تخریب کار شاید بہاولپور کی طرح بروقت پکڑے بھی جاتے، لیکن یہ مسئلہ نہیں ہے۔ شاید ہم حادثہ ہو جانے کے بعد الرٹ ہوتے اور پھر سو جاتے ہیں۔ ریلوے حکام کو تازہ حادثات کے علاوہ سابقہ سانحات کو بھی زیر غور لا کر حفاظتی انتظامات پر نظرثانی کرنا اور پٹرولنگ کے نظام کو پھر سے بحال کر دینا چاہئے کہ حادثات اور تخریب کاری کی روک تھام ہو سکے۔

مزید : اداریہ


loading...