تعمیراتی قوانین کی خلاف ورزی کرنیوالے پلازہ مالکان کو نوٹس

تعمیراتی قوانین کی خلاف ورزی کرنیوالے پلازہ مالکان کو نوٹس

لاہور(اقبال بھٹی)لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی غیر قانونی کمرشل تعمیرات کرنے والوں سے جرمانہ کی مد میں اربوں روپے وصول کرے گی کیونکہ رہائشی سکیموں کے کمرشل زونز میں مبینہ کرپشن کا انکشاف ہوا ہے،پلازوں کی تعمیر کے لئے 4فلور یعنی 38فٹ کی اونچائی پر نقشے منظور کروائے جاتے ہیں ،اورایل ڈی اے کے ملازمین کی ملی بھگت سے مزید4سے 6فلور تعمیر کے لئے جاتے ہیں اور یوں اتھارٹی کواپنے ہی ملازمین کے ہاتھوں کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑتا ہے ۔تفصیلات کے مطابق لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے اپنی رہائشی سکیموں میں کمرشل پلازوں کی غیر قانونی تعمیرات کا نوٹس لے لیا ہے ذرائع کے مطابق اتھارٹی کے علم یہ بات آئی ہے کہ کمرشل پلازوں کے نقشے قانون کے مطابق 4فلور کے پاس ہوتے ہیں اور اس کی اونچائی38فٹ ہوتی ہے جبکہ موقعہ پر ایسا نہیں ہوتا۔ ایل ڈی اے قانون کے مطابق کمرشل غیر قانونی تعمیر کا جرمانہ 1200روپے فی مربع فٹ ہے اور یوں ہر پلازے سے اتھارٹی کو 25لاکھ روپے سے لے کر 2کروڑروپے تک حاصل ہوں گے اس طرح سینکڑوں غیر قانونی پلازے ایل ڈی اے کی تمام سکیموں میں موجود ہیں جن سے اتھارٹی کو اربوں روپے کی آمدنی متوقع ہے۔ اس حوالے سے جب ایل ڈٰ ی اے کے افسران سے رابطہ کیا گیا تو ان کاکہنا تھا کہ یہ بات اتھارٹی کے مشاہدے میں آئی ہے کہ پلازہ مالکان کے نقشے تو قانون کے مطا بق 4منزلہ38فٹ اونچائی پر منظور کئے جاتے ہیں لیکن پلازہ مالکان مزید منزلیں بنا لیتے ہیں جس کے پیش نظر اب ان پلازہ مالکان کو ایل ڈی اے ،ایکٹ، کے تحت جرمانہ کر کے وصولی کی جائے گی اس حوالے سے پلازہ مالکان کو نوٹس ارسال کر دئیے گئے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...