وزیر خزانہ کی زیر صدارت اجلاس ،فاٹا میں اساتذہ کی اپ گریڈیشن کا فارمولا پیش

وزیر خزانہ کی زیر صدارت اجلاس ،فاٹا میں اساتذہ کی اپ گریڈیشن کا فارمولا پیش

اسلام آباد(صباح نیوز)وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار کی صدارت میں فاٹا کے سکولوں اور کالجوں کے اساتذہ کی اپ گریڈیشن کے مسئلے پر اہم اجلاس ہوا ایڈیشنل چیف سیکریٹری فاٹا سیکریٹریٹ نے اجلاس کو اساتذہ کی مجوزہ اپ گریڈیشن سے متعلق امور پر بریفنگ دی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ مسئلہ 2012سے حل طلب ہے جسکی وجہ سے فاٹا کے اساتذہ میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے، اپ گریڈیشن سے تمام قبائلی علاقوں کے 20ہزار اساتذہ کو فائدہ ہو گا۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے اس موقع پر کہا کہ موجودہ حکومت نے بہت سے دیرینہ مسائل کو حل کیا ہے تعلیم اور اساتذہ کی فلاح وزیر اعظم نواز شریف کی ترجیح ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرے میں اساتذہ کی خدمات کو بہتر طریقے سے سراہا جانا چاہیے، بروقت فیصلہ نہ کرنے سے مالی بوجھ بڑھ چکا ہے تاہم مسئلے کو حل کرنے اور فاٹا کے اساتذہ کے دیرینہ مطالبے کو پورا کرنے کے لیے وفاقی حکومت 4درجہ فارمولے کے تحت اساتذہ کی اپ گریڈیشن کرنے کے لیے تیار ہے اور یہ فیصلہ یکم جولائی 2012سے لاگو تصور کیا جائے گا ۔انہوں نے فنانس ڈویژن اور فاٹا سیکریٹریٹ کو اس فیصلے پر عملدرآمد کا طریقہ کار طے کرنے کی ہدایت کی انہوں نے مزیدکہا کہ فاٹا کے عارضی طور پر بے گھر ہونیو الے افراد کی بحالی اور تعمیر نو حکومت کی ترجیح ہے اور اس مقصد کے لیے کسی بھی تاخیر کے بغیر فاٹا سیکریٹریٹ کو مطلوبہ مالی مسائل مہیا کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت فاٹا کے تمام افراد کی بحالی کو مکمل یقینی بنائے گی اجلاس میں وزیر سیفران لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عبدالقادر بلوچ فاٹا کے ممبران قومی اسمبلی و سینیٹ اور وزارت خزانہ ، سیفران اور فاٹا سیکریٹریٹ کے اعلی حکام نے شرکت کی۔

مزید : علاقائی


loading...