بھارتی سپریم کورٹ نے بھارتی آئین کی دفعہ 370کے تحت ریاست کی خصوصی حیثیت کی دلیل مسترد کردی

بھارتی سپریم کورٹ نے بھارتی آئین کی دفعہ 370کے تحت ریاست کی خصوصی حیثیت کی ...

نئی دہلی (کے پی آئی)بھارتی سپریم کورٹ نے مقبوضہ کشمیر حکومت کی طرف سے بھارتی آئین کی دفعہ 370کے تحت خصوصی حیثیت کی دلیل مسترد کرتے ہوے حکم دیا ہے کہ جموں وکشمیر کے طلبا و طالبات بھی میڈیکل کالجز میں بھارتی انٹری ٹسٹ نظام کے تحت ہی داخلہ حاصل کر سکیں گے ۔ مقبوضہ کشمیر حکومت نے عدالت سے درخواست کی تھی کی جموں وکشمیر کے طلبا و طالبات کو میڈیکل کالجز میں داخلے کے لیے بھارتی انٹری ٹسٹ نظام(نیشنل ایلیجی بلٹی کم انٹرنس ٹیسٹ(NEET) ) سے مستشنی رکھا جائے کیوں کہ بھارتی آئین کی دفعہ 370کے تحت ریاست کو خصوصی حیثیت حاصل ہے۔بھارتی سپریم کورٹ نے اس سلسلے میں مقدمے کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا ہے۔ اس فیصلے کے تحت مقبوضہ کشمیر حکومت کے اپنے میڈیکل کالجز میں داخلے بھی بھارتی نظام کے تحت داخلے دیے جائیں گے ۔ مقبوضہ کشمیر کی حکومت اور اپوزیشن نے اس فیصلے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے کیوں کہ اوپن میرٹ پر جموں وکشمیر کے کم طلبہ و طالبات میڈیکل کالجز میں داخلہ حاصل کر سکیں گے ۔

۔ بات قابل ذکر ہے کہ ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کورسز میں داخلے کیلئے بھارتی سطح کے آل انڈیا پری میڈیکل ٹیسٹ (AIPMT) کا پہلا مرحلہ یکم مئی اتوار کو منعقد کیا گیا جبکہ دوسرا مرحلہ24جولائی کو انجام دیا جائے گا۔اس بار یہ ٹیسٹ سپریم کورٹ کی ہدایات کے مطابق پورے ملک میں ایک ساتھ لیا جارہا ہے اور اسے نیشنل ایلیجی بلٹی کم انٹرنس ٹیسٹ(NEET) کا نام دیا گیا ہے۔ سپریم کورٹ کے حکم پر بھارتی حکومت نے یہ واضح کیا ہے کہ میڈیکل انٹرنس ٹیسٹ سے متعلق نئے ضوابط ملک کی تمام ریاستوں اور بھارت کے زیر انتظام علاقوں میں لاگو ہونگے جن میں جموں کشمیر بھی شامل ہے۔اس صورتحال کے باعث نئے ضوابط کے تحت منعقد ہورہے میڈیکل انٹرنس ٹیسٹ نے جموں کشمیر کے امیدواروں کیلئے سخت مشکلات کو جنم دیا ہے کیونکہ پیشہ وارانہ کورسز میں داخلے سے متعلق ریاستی بورڈBOPEEنے پہلے ہی سالانہ انٹرنس ٹیسٹ کی تیاریاں شروع کردی ہیں ۔اس دوران ریاستی حکومت نے اس معاملے کو لیکر سپریم کورٹ سے رجوع کرتے ہوئے درخواست کی تھی کہ دفعہ370اور دفعہ35Aکے تحت ریاست کو حاصل خصوصی درجے کی بناپر28اپریل کے عدالت عظمی کے فیصلے میں ترمیم عمل میں لائی جائے۔ اس ضمن میں ریاستی محکمہ قانون نے سپریم کورٹ میں ایک عرضداشت دائر کی تھی جس میں عدالت سے درخواست کی گئی تھی کہ وہ جموں کشمیر کے خصوصی آئینی درجے کو سامنے رکھتے ہوئے ریاست کو28اپریل کے عدالتی فیصلے اورNEETسے مستثنی قرار دینے کے احکامات صادر کرے۔

مزید : عالمی منظر


loading...