سیالکوٹ، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ میں کروڑوں روپے کی خوردبرد کا انکشاف

سیالکوٹ، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ میں کروڑوں روپے کی خوردبرد کا ...

لاہور(ارشد محمود گھمن )پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ سیالکوٹ میں پنجاب اور و وفاقی حکومت کی طرف سے جاری کردہ اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں میں کروڑوں روپے کی خورد برد کا انکشاف ہواہے ،جبکہ ٹھیکیداروں نے اعلیٰ افسرایگزیکٹو انجینئر ناصر جنجوعہ کی آشیر باد پر سیمنٹ میں گاچی کا استعمال کرنے کیلئے کارخانہ لگا لیا ۔ مقامی ایم این اے ،ایم پی ایز نے بڑے بڑے ترقیاتی منصوبوں میں کرپشن کے خلاف چپ کا روزہ رکھ لیا۔ نیب نے اربوں روپے کے فنڈز میں خوردبرد اور ناقص میٹریل کے استعمال کرنے کے خلاف حکومتی خزانہ کو کروڑوں کا نقصان پہنچانے کے خلاف متعلقہ محکمہ کے خلاف تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کر دیا ۔با وثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وفاق اور پنجاب حکومت نے ضلع سیالکوٹ کے مقامی ایم این ایز اور ایم پی ایز کو تقریبا دس ارب روپے کے ترقیاتی منصوبے حلقوں کی ڈویلپمنٹ کیلئے محکمہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ سیالکوٹ کو جاری کئے ۔جن میں سکولز ،کالجز ،بلڈنگز ،نالے ،ٹف ٹائل روڈز اور قبرستان وغیرہ شامل ہیں جاری کیے جس میں متعلقہ ایگزیکٹو انجینئر ناصر جنجوعہ نے اپنے من پسند ٹھیکیداروں سے مبینہ طور پر ملی بھگت کرتے ہوئے کروڑوں روپے کی کرپشن کرنے کے لیے سیمنٹ میں گاچی کا استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ۔ذرائع نے بتایا ہے کہ مذکورہ انجینئر کا حلقہ کے ایم این اے ایم پی ایز کے ساتھ ایک ’’ریلیشن شپ ‘‘چلا آ رہا ہے جس کی وجہ سے مقامی ایم پی اے ایم این اے اس کی کرپشن کے خلاف آواز اٹھانا تو دور کی بات ہے اعلیٰ حکام تک بہترین ڈویلپمنٹ اور جاری ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے ا چھی کارکردگی کو سراہا جاتا ہے ۔ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ اگر شروع کیے گئے تمام منصوبوں کے لیبارٹری ٹیست لیے جائیں تو ان منصوبوں میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔اس بابت موقف دریافت کرنے کے لیے ایگزیکٹو انجینئر ناصر جنجوعہ سے رابطہ کیاگیا تو انہوں نے سنگین الفاظ کا چناؤ کرتے ہوئے موبائل فون بند کردیا۔

مزید : صفحہ آخر


loading...