ناقص اشیاء کا استعمال، گیسٹرو کی وبا مختلف شہروں میں پھیلنے لگی، متعدد شہری ہسپتال داخل

ناقص اشیاء کا استعمال، گیسٹرو کی وبا مختلف شہروں میں پھیلنے لگی، متعدد شہری ...

خانیوال، ہارون آباد، ٹھٹھہ صادق آباد (نمائندگان) جنوبی پنجاب کے مختلف شہروں میں ناقص اور مضر صحت اشیائے (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

خور دو نوش کی سرعام فروخت اور استعمال سے گیسٹرو کی وبا میں اضافہ ہوگیا۔ جس سے متعدد شہری ہسپتالوں میں داخل ہوئے۔ خانیوال سے نمائندہ پاکستان ،ڈسٹرکٹ رپورٹر کے مطابق گرمی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی گیسٹرو کی وبا تیزی سے پھیلنے لگی ۔ خانیوال اور گردونواح میں گرمی اور حبس میں شدیداضافہ دیکھنے میں آیا جس کی وجہ سے گیسٹرو کے مرض میں اضافہ دیکھنے میں آیا ایک ہی دن میں سرکاری ہسپتال میں47افراد لائے گئے جن میں20خواتین بھی شامل ہیں متاثرہ افرا دمیں مریم ،عبدالرحمن ،طلحہ، فاطمہ محمدعرفان ،محمدخان ،شہناز،فردوس،شاہینہ ،فرحین ،فردوس، حرا، فاہد، ارشاد،ذوالفقار، ایاز، بلقیس، سمیرا ،اعجاز، حاجی غلام محمدودیگر شامل ہیں۔ہارون آباد سے نامہ نگار کے مطابق ناقص اشیاء اور مضر صحت اشیاء کی وجہ سے علاقہ ہارون آباد آباد میں گیسٹرو کا مرض پھیلنے کا اندیشہ منڈلانے لگا ہے اور اب تک اس مرض کے چھ مریض علاج کے لیے داخل کیے جاچکے ہیں۔ٹھٹھہ صادق آباد سے نامہ نگار کے مطابق شہریوں ،چوہدری طاہر علی ،چوہدری زبیر خالد ،چوہدری وقار ،غلام مرتضی ،عبد اللہ سندھو، بابر علی ،اسد علی ،آصف حسین ،بابا فاضل ،لیاقت علی ،محمد علی اور دیگر شہریوں نے میڈیا کو بتایا کہ اڈاپل14،جہانیاں اور ٹھٹھہ صادق آباد میں گرمی کا موسم شروع ہو تے ہی مارکیٹ میں جعلی اور دو نمبر رنگ برنگی مشروبات فروخت کی جانے لگی جس میں سکرین کے علاوہ مضر صحت کیمیکل استعمال کرنے کا بھی انکشاف ہوا ہے یہ مشروبات ہر گلی ،محلے ،اڈوں اور بازاروں میں فروخت کی جا رہی ہیں۔ جس سے شہری ہیضہ ،گیسٹرو کے علاوہ ہیپاٹائٹس ،معدے ،جگر ،آنتوں کی بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب ،کمشنر ملتان ،محکمہ فوڈ اور ڈی سی او خانیوال سے فوری نوٹس لینے اور کارروائی کی اپیل کی ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...