جامعات کا قیام حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے ، گورنرسندھ

جامعات کا قیام حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے ، گورنرسندھ

 کراچی (اسٹاف رپورٹر) گورنر سندھ اور شہید بے نظیر بھٹو یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز کے چانسلر ڈاکٹر عشرت العباد خان نے کہا ہے کہ جامعات کا قیام اور ان کی ترقی حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے اور خصوصاً مختلف شعبوں کیلئے مخصوص جامعات کے قیام سے ان شعبوں کے فروغ میں نمایاں مدد ملے گی جن میں ویٹرنری اور قانون کے شعبوں کی جامعات کا قیام شامل ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونیورسٹی کے سینٹ کے پہلے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر گورنر سندھ کے مشیر برائے اعلیٰ تعلیم سید وجاہت علی اور وائس چانسلر ڈاکٹر کے بی میر بحر بھی موجود تھے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ اعلیٰ تعلیم کسی بھی معاشرے کی تعمیر و ترقی میں بنیادی حیثیت کی حامل ہوتی ہے کیونکہ مختلف شعبوں کے ماہرین نہ صرف ان شعبوں کی ترقی کے لئے کام کرتے ہیں بلکہ ان کے باعث ملک کے سماجی و معاشی شعبوں کو بھی فائدہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی ، سماجی ، ماحولیاتی اور سیکیورٹی حوالوں سے مسائل کے حل میں جامعات سے فارغ التحصیل پروفیشنلز اور ماہرین نمایاں کردار ادا کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ زراعت میں لائیو اسٹاک کا حصہ 56 فیصد سے زیادہ ہے جبکہ مجموعی قومی پیداوار میں اس سیکٹر کا حصہ 11.8 فی صد کے قریب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ نسل کی بھینسوں اور گائیوں کے باعث پاکستان ڈیری مصنوعات کے حوالے سے ایک نمایاں مقام رکھتا ہے، لیکن ان میں بہتری کی گنجائش موجود ہے خصوصاً دودھ کی روزانہ پیداوار کو بڑھانے کیلئے سائنسی طریقوں کا استعمال بہت ضروری ہے اس لئے ویٹرنری شعبہ کے ماہرین کی ذمے داری ہے کہ وہ اس ضمن میں بھرپور کوشش کریں۔ انہوں نے کہا کہ اس یونیورسٹی کے قیام سے سرکاری اور نجی شعبہ کے اداروں میں درکار ماہرین کی تیاری میں مدد ملے گی اور ڈیری مصنوعات کی پیداوار اور معیار میں بھی نمایاں اضافہ ہوگا۔ انہو ں نے مزید کہا کہ لائیواسٹاک اور فارمنگ کی صنعتوں کو مزید بہتر بنانے کیلئے جدید ترین طریقوں کے استعمال کی ضرورت ہے اور اس ضمن میں یہ ماہرین بہت مدد گار ثابت ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دور درازعلاقہ میں واقع ہونے کے باعث یونیورسٹی کو اعلیٰ تعلیم یافتہ فیکلٹی کے حصول ، فنڈز کی فراہمی اور سیکیورٹی کے حوالے سے مسائل کا سامنا ہے ، جن کے حل کیلئے ہر ممکن مدد فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ جامعات میں سیکورٹی کو یقینی بنانے کیلئے ایک اعلی اختیاراتی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو شہید بے نظیر بھٹو یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز کا بھی معائنہ کرکے درکار سیکورٹی اقدامات کے بارے میں اپنی سفارشات تیار کرے گی اور جامعات کو فول پروف سیکورٹی فراہم کرنے کیلئے انہیں ہر ممکن مدد اور تعاون فراہم کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہائر ایجوکیشن کمیشن کے تعاون سے یونیورسٹی میں ویڈیو کانفرنسنگ اور ڈیجیٹل لائبریری کی سہولت بھی فراہم کی جائے گی۔ وائس چانسلر کے بی میر بحر نے گورنر سندھ کو بتایا کہ سکرنڈ جیسے دیہی علاقہ میں ہونے کے باوجود یونیورسٹی احسن طریقہ سے کام کررہی ہے انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی میں اس وقت 220 طالب علم تعلیم حاصل کررہے ہیں۔ انہوں نے گورنر سندھ کو یونیورسٹی کے قیام، مسائل اور مستقبل کے منصوبوں کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ بھی دی۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...