مالیاتی ایوارڈ کا اجراء نہ ہونا وفاقی حکومت کی آمرانہ سوچ کا عکاس ہے ، نثار کھوڑو

مالیاتی ایوارڈ کا اجراء نہ ہونا وفاقی حکومت کی آمرانہ سوچ کا عکاس ہے ، نثار ...

 کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ کے سینئر وزیر برائے تعلیم نثارا حمد کھوڑو نے کہا ہے کہ پانچ سال سے نئے قومی مالیاتی ایوارڈ کا اجراء نہ ہونا وفاقی حکومت کی آمرانہ سوچ کا عکاس ہے ۔مسلم لیگ(ن) کی حکومت صوبائی خودمختاری کو دل سے تسلیم نہیں کررہی ہے ۔ہم سندھ کا حق لے کر رہیں گے ۔ پاناما لیکس پر وزیر اعظم بند گلی میں کھڑے ہیں ۔سندھ میں ابھی تک 50فیصد بچے اسکول نہیں جارہے۔ان بچوں کو اسکولوں میں لانے کیلے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو مقامی ہوٹل میں پاکستان میرین اکیڈمی کے تحت پہلے بین الاقوامی میرین اکیڈمی سیمینار سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ پاکستان نیوی سمیت دیگر فورسز کے ادارے بہترین کارکردگی دکھا رہے ہیں۔اس طرح کے بین الاقوامی سطح کے سیمینار ہونا وقت کی ضرورت ہے۔پاکستان میرین کی دنیا میں لیڈر کے طورپرجاناجاتاہے ۔سیکیورٹی دارے ملکی حفاظت کے لیے اپنے فرائض جاں فشانی کے ساتھ انجام دے رہے ہیں۔حکومت کا کام ہے کہ ان اداروں کے ساتھ بھرپور تعاون کرے ۔انہوں نے کہا کہ صوبے میں فری تعلیم اور مفت کتابیں فراہم کی جارہی ہیں والدین اپنے بچوں کو اسکول بھیجیں ۔اساتذ ہ کی اسکولوں میں حاضری کو یقینی بنانے کیلئے بایومیٹرک سسٹم متعارف کریا جاچکا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ صوبے میں تعلیم کے فروغ اور معیار کی بہتری کے لیے کام کررہی ہے اور کیڈٹ کالج کا قیام اس کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔بعدازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ وفاقی حکومت تنہائی کا شکار ہے ،دیگر جماعتیں حکومت سے تعاون پر آمادہ نہیں ہیں ۔پارلیمنٹ کی مدت میں اس وقت ایک برس کم کرکے مسلم لیگ (ن) کو مظلوم نہیں بنانا چاہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت سے کثیر الجہتی بنیاد پر این ایف سی ایوارڈ کی تقسیم ہضم نہیں ہورہی ہے ۔پانچ سال سے نئے قومی مالیاتی ایوارڈ کا اجراء نہ ہونا وفاقی حکومت کی آمرانہ سوچ کا عکاس ہے۔ مسلم لیگ(ن) کی حکومت صوبائی خود مختاری کو بھی دل سے تسلیم نہیں کررہی ہے لیکن تمام تر رکاوٹوں کے باوجود ہم سندھ کا حق لے کر رہیں گے ۔انہوں نے کہا کہ پاناما لیکس پر وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف بند گلی میں کھڑے ہیں ۔ وزیراعظم پارلیمنٹ میں اپنے اثاثوں سے متعلق صفائی پیش کریں ۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں اگر بارہ بارہ گھنٹے لوڈشیڈنگ کا سلسلہ ختم نہ ہوا تو وفاقی حکومت کے خلاف سندھ کے عوام دھرنا دیں گے ۔ وفاقی حکومت لوڈشیڈنگ کے عوام سے زیادتی بند کرے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...