محکمہ خوراک ڈویژن نے گندم خریداری کا 50فیصد ہدف حاصل کر لیا، ناجائز کٹوتیوں، آڑھتیوں کو نوازنے کا عمل جاری

محکمہ خوراک ڈویژن نے گندم خریداری کا 50فیصد ہدف حاصل کر لیا، ناجائز کٹوتیوں، ...

ملتان ،میلسی ،میاں چنوں ، عبدالحکیم، ٹھٹھہ صادق آباد ،قطب پور،ہیڈ راجکاں‘ بہاولپور،جتوئی منکیرہ(خبر نگار + نمائندگان) محکمہ خوران ملتان ڈویثرن نے چاروں اضلاع میں گندم خریداری کا 50 فیصد ہدف حاصل کر لیا ہے ملتان ‘خانیوال‘ وہاڑی اور لودھراں کے اضلاع میں 10 مئی تک 3 لاکھ 36 ہزار 881 میٹرک ٹن گندم خرید کر لی ہے محکمہ خوراک زرائع کیمطابق گذشتہ روز تک ملتان ڈویثرن میں 46 لاکھ 74 ہزار 294 بوری باردانہ بھی جاری کر دیا گیا ہے دریں اثنا محکمہ خوراک کے گندم خریداری مراکز پر ناجائز کٹوتیوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے جبکہ باردانہ کے اجراء میں بھی سنٹر انچارج کی ملی بھگت سے آڑھتیوں ،بیوپاریوں کو نوازنے کا عمل جاری ہے ضلع ملتان میں تمام خریداری مراکز پر گوسلو پالیسی کا عمل بھی برقرار ہے جس سے گندم کے کاشتکاروں کو بھی فصل کی فروخت میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔میلسی کے نمائندہ خصوصی کیمطابق آ رے واہن کے پاسکو پر چیز سینٹر انچارج نے باردانے کی لوٹ سیل لگا دی مستحق زمینداروں کا شتکاروں کی بجائے گگو ، وہا ڑی ، بوریوالہ ، ماچھیوال کے آ ڑھتیوں کو دوسو روپے فی بو ری لیکر جاری کیا جا رہاہے سینٹر میں بیٹھنے کی بجائے ایک ائیر کنڈیشنڈ رہائشگاہ لیکر وہاں ڈیل کرکے بیو پاریوں میں تقسیم کرر ہاہے گزشتہ روز زونل ہیڈ وہا ڑی پاسکو راؤ محمد اکرم کو شکا یت کی گئی تو دس منٹ کے اندر پاسکو سینٹر انچارج موقع پر آ گیا لیکن کسی کو باردانہ ایشونہیں کیا اس بارے میں رائے عبدالکر یم سے موقف لینے کی کوشش کی گئی تو انہوں نے اپنا موبائل اٹینڈ ہی نہیں کیا ۔ میاں چنوں کے نمائندہ پاکستان کیمطابق پاکستان کسان اتحاد کے رہنماؤں میاں سجاد حسین نازش،مہر شوکت علی سنپال،چوہدری ذوالفقار علی دیگر نے میڈیا کوبتایا کہ حلقہ پٹواریوں شیخ توفیق احمد،شیخ عابداور شاہد یوسف بیوپاریوں کے کہنے پر بوگس کاشت ڈال کر ایسے لوگوں کو باردانہ دیکر نوازارہے ہیں جنکی مذکورہ حلقہ میں کوئی کاشت تک نہیں ہے،مذکورہ پٹواریوں اور بیوپاریوں کی ملی بھگت سے میاں چنوں کا باردانہ کچاکھوہ،عبدالحکیم اور ہاڑی میں استعمال ہورہاہے،اگر مذکورہ پٹواریوں کیخلاف کاروائی عمل میں نہ لائی گئی تو روڈ بلاک کرکے احتجاج کریں گے۔عبدالحکیم سے نمائندہ خصوصی کیمطابق سست روی اور دیگر شکایت پر پہلے کوآرڈی نیٹر رانا محمد رفیق کو تبدیل کر کے انکی جگہ واٹر منیجمنٹ کے ارشد بخاری کی تعیناتی کی گئی ہے انھوں نے آتے ہی پہلے دن کاشت کاروں کو حیلے بہانوں سے تنگ کرنا شروع کر دیا ہے ۔،کنڈ سرگانہ ،قتال پور ، بربیگی ، شکروالہ ، حو یلی کو رنگہ ، تریلی ، دائرہ محرم شاخ مدینہ، باگڑ ، جسوکانویں، اولکھ سدھو ، سرائے سدھو،منظر آباد ، کے علاقہ کے کاشت کاروں اختر ، نواز، فیاض، اکرم ، سلطان، فیض، رحیم بخش، ذولفقار علی ،محمد اصغر، امجد ، لیاقت اور دیگرنے بتایا ہے کہ لمبی قطار کے بعد جب انکی باری آتی ہے اتو ان پر اعتراض لگا کر ان کو دھکے دیکر قطار سے زبردستی نکالا دیا جاتا ہے ،جو کوآرڈی نیٹر کی خدمت کر دیتا ہے انکی فائل پر نہ ہی اعتراض لگایا جاتا ہے اور جتنا وہ باردانہ طلب کریں دے دیا جاتا ہے ، کاشت کاروں نے کوآرڈی نیٹر کی تبدیلی کا مطالبہ کیاہے ۔ ٹھٹھہ صادق آباد سے نمائندہ پاکستان کیمطابق گندم خریداری سنٹرٹھٹھہ صادق آباد پر باردانہ اجراء کے 16روز بعد بھی مستحق غریب کسان مسلسل باردانہ سے محروم ہیں،سنٹر کوآڈینٹر غلام مصطفی،فوڈ انسپکٹر رانا سرور کی طرف سے مند پسند،چہہتے افراد،مڈل مین بیوپاریوں میں باردانہ کی فراہمی سرعام جاری ہے،کسانوں نے پونے داموں گندم فروخت کرنے پر مجبور ہیں،کسانوں مشتاق،جاوید،اسلم،بشیر،محمد حسین،ریاض،عمران نے نوزیر اعلیٰ سمیت اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔دریں اثناء کاشتکاروں محمد حنیف ،شکیل احمد ،سکندر علی ،محمد اکرم ،اسلم علی،چوہدری سلیم ،جان محمد ،بابا شمشاد علی ،عطا ء اللہ ،عابد علی اور دیگر کاشتکاروں نے بتایا کہ گندم کی فصل کے آغاز پر ہی بیو پاریوں نے مڈل مینوں نے مالی پٹواریوں کو بھاری رشوت دے کر فرضی کاشت ڈلوا کر فرضی نام شامل کر دیے تھے باردانہ شروع ہو تے ہی مڈل مینوں اور بیوپاریوں نے باردانہ کے حصول کے لئے بھی رشوت کا استعمال روع کردیا اور اس طرح اصل کاشت کاروں کی بجائے بیوپاری حضرات گندم فروخت کر کے لاکھوں روپے کا فائدہ اٹھا گئے کاشتکاروں نے وزیر اعلی پنجاب ،کمشنر ملتان اور محکمہ فوڈ اور محکمہ زراعت کمے اعلی احکام سے اپیل کی ہے کہ اس کرپشن کی اصل جڑ مالی پٹواری ہیںؒ پہلے ان کا احتساب شروع کیا جائے اور فوڈ سنٹر میں ملوث کر پٹ ملازمین کے خلاف سخت قانونی کا رروائی عمل میں لائی جائے ۔قطب پور کے نامہ نگار کیمطابق چکوک نمبر307,305,299,255 ,253ڈبلیو بی کے کاشتکاروں محمد یوسف ،محمد رمضان ،وسیم احمد ،عبدالرزاق ،محمد سجاد ،مہر عابد،مہر اشفاق نے بتایا کہ فوڈ سنٹر پر نیاز شاہ انسپکٹر )دنیاپور)باردانہ لاکھوں روپے رشوت لے کر راتوں رات باردانہ آڑھتیوں کو دیدیتا ۔جبکہ دو کلو فی بوری گندم 2کلو کٹوتی کے علاوہ گندم خراب یا مٹی ہونے پر 5کلو یا پھر ایک بوری تک وصولی بھی کی جارہی ہے ۔عملہ یہاں بیٹھ کر لاکھوں روپے کی کرپشن کر رہا ہے انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی خصوصی ٹیم بھیج کر معائنہ کروائیں ۔ ہیڈ راجکاں سے نمائندہ پاکستان کیمطابق شاہی غلہ گودام پر تعینات کو آرڈینیٹر حافظ زاہد رزاق نے میڈیا کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت کے مطابق ڈی سی او بہاولپور کی سربراہی میں اسسٹنٹ کمشنر یزمان کی رہنمائی میں سینٹر پر باردانہ کی تقسیم انتہائی منصفانہ انداز میں کی جا رہی ہے ۔ چھوٹے کاشتکاروں کو سب سے پہلے باردانہ دیا گیا ۔ غلہ گودام پر بیوپاریوں او ر مڈل مینوں کو باردانہ بالکل نہیں دیا جا رہا ۔اس موقع پر سینٹر پر موجود زمینداروں کا مؤقف لیا گیا تو زمیندار فرحت معین نمبردار ، ملک عباس بوہڑ چئیر مین میرانہ یونین کونسل ، ہارون رشید نمبردار، ناصر جٹ نمبردار، اشفاق احمد ، انوارلحق ، نواز باجوہ ، محمد تنویر و دیگران نے کوآرڈینیٹر کی کارکردگی کو سراہا اور سینٹر پر شفافیت کی تعریف کی۔بہاولپور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کیمطابق موضع ڈیراورواہ کے رہائشی کاشتکار محمداسحاق نے ڈی اوسی کودرخواست دی کہ اس کاکاشتہ رقبہ بارہ ایکڑ ہے اور اس کی فائل پر390 لگایاگیاتھا جس کاریکارڈ محکمہ خوراک کے رجسٹر میں بھی درج ہے لیکن گندم خریداری سنٹربنی شیلز بارہ بی سی پرتعینات سپروائزر محمداصغر شاہ نے اس کی جگہ کسی دیگرشخص کوباردانہ جاری کردیااوراسے باردانہ دینے سے انکارکردیا اوربارہ ایکڑکے کاشتکاروں کاسیریل نمبر600 سے بھی تجاوز کرچکاہے جس پرڈی اوسی نے فوڈسنٹر انچارج کوفوری باردانہ جاری کرنے کاحکم دیاتوسپروائزر اصغرشاہ نے ڈی اوسی کے احکامات پھاڑڈالے اورباردانہ دینے سے انکارکردیا۔ متاثرہ کاشتکار نے کمشنر بہاولپور، ڈی سی اوبہاولپور، ڈپٹی ڈائریکٹرخوراک اور ڈی ایف سی بہاولپورسے فوری طورپرکاروائی کرنے کامطالبہ کیاہے۔جتوئی سے نامہ نگار کیمطابق بستی عارف کے کسانوں نے الزا م لگایا ہے کہ چوک پرمٹ پاسکو سنٹر انچارج کوثر حیات روکھڑی نے رات کو باردانہ بیوپاریوں کو فروخت کرنا ہے اور سارا دن سنٹر پر مڈل مینوں کے ڈیرے ہوتے ہیں نہ تو بستی عارف رکھ ، بستی عارف کے کاشتکاروں کو ایک بوری تک نہیں ملی رابطہ کرنے پر پاسکوسنٹر انچار ج کوثر حیات روکھڑی نے کہا ہے کہ میں سنٹر کا انچارج ہوں اور میں جس کو باردانہ دوں یا نہ دوں تو الزام تراشی کرنے پر باز آ جائیں بستی عارف کے کسانوں نے کہا ہے کہ آج سنٹر انچارج کے خلاف مین روڈ بلاک کر کے احتجاج کریں گے ۔منکیرہ کے نامہ نگار کیمطابق فوڈ سنٹر منکیرہ انتظامیہ کیلئے سونے کی چڑیا بن گیا باردانہ کی تقسیم میں کرپشن کی انتہا چھوٹے کاشتکار باردانہ کے حصول کیلئے 20دنوں سے فوڈ سنٹر کے چکر لگا لگا کر بے حال ہو چکے ہیں فوڈ انسپکٹر رانا اکرم اپنے پرائیویٹ لوگوں کی ملی بھگت سے میرٹ پر تیار ہونے والی لسٹوں کو نذر انداز کر کے من پسند اور بھتہ دینے والے لوگوں کی فرضی لسٹیں تیار کر کے باردانہ کی تقسیم کرا رہے ہیں فوڈ کوآرڈینیٹر نے تیار ہونے والی جعلی لسٹ کی ذمہ داری اسسٹنٹ کمشنر پر ڈال دی اسسٹنٹ کمشنر نے اس بارے کہا کہ میرا س سے کوئی تعلق نہ ہے ممبر فوڈ سنٹر کمیٹی چوہدری عنصر گوندل نے میڈیا کو موقف میں کہا کہ فوڈ انسپکٹر رانا اکرم نے کرپشن کا بازار گرم کر رکھا ہے گندم کی وصولی کی مد میں اپنے پرائیویٹ غنڈوں سے بھتہ وصول کروا رہا ہے بھتہ نہ دینے والے زمینداروں کی گندم واپس کر کے انہیں ذلیل خوار کیا جا رہا ہے سینکڑوں کسانوں نے فوڈ سنٹر پر احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلی پنجاب سے انکوئری کروا کر متعلقہ افراد کے خلاف سخت کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...