موسم میں شدت کے ساتھ ہی بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں اضافہ، کاروبار زندگی شدید متاثر

موسم میں شدت کے ساتھ ہی بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں اضافہ، کاروبار زندگی شدید متاثر

خانیوال، وہاڑی، حاصل پور (نمائندگان) موسم میں شدت کے ساتھ ہی بجلی لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں اضافہ ہوگیا۔ تاجروں کے کاروبار متاثر جبکہ طلبہ کو امتحان دینے میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ تفصیل کے مطابق خا نیوال سے بیورونیو ز کے مطابق گر می کی شد ت میں اضا فہ ہو تے ہی دیہی علا قو ں میں بجلی کی بند ش کا دو را نیہ بڑ ھ گیا ہے عوا م کو شدید مشکلا ت کا سا منا چھ ما ہ میں بجلی کی لو ڈ شیڈ نگ ختم کر نے دعو ں کا پو ل کھل گیا ہے ان خیا لا ت کا ظہا ر پی ٹی آئی کے رہنما ء مہتا ب یو سف ایڈوو کیٹ نے /84دس آ ر میں معززین علا قہ سے بات چیت کر تے ہو ئے کیا۔ خانیوال سے نمائندہ پاکستان کے مطابق گزشتہ کئی دنوں سے گرمی اور شدت کے ساتھی ساتھ لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں آئے روز اضافہ ہورہا ہے انہوں نے لوڈ شیڈنگ پر غم غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے کاروبار زندگی بری طرح متاثر ہورہے ہیں دوسری طرف فصلیں مقررہ وقت پر پانی نہ ملنے کی وجہ سے بری طرح متاثر ہورہی ہیں ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز صدر ڈیلر کار ایسوسی ایشن ناصر شاہ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔وہاڑی سے بیورو رپورٹ،نا مہ نگار کے مطابق انٹر میڈ یٹ کے امتحانات میں ایف ایس سی کے پرچہ کے حوالہ سے ایم سی گرلز ہائی سکول بلاک پیپلز کالونی سنٹر پر بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ اور وولٹیج کی کمی کی وجہ سے پنکھے بند ہونے پر طالبات کا برا حال ، متعدد طالبات گرمی سے بیہوش ہو گئیں جس پر والدین اور اہل علاقہ کا احتجاج، والدین اکبر علی ، مختار احمد ، طالب حسین ، عاشق علی ، ولا ئیت حسین ، عبدالرشید، محمد عثمان، شبیر احمد، اختر حسین ، صفدر علی ودیگر نے احتجاج کر تے ہوئے صحافیوں کو بتایاکہ بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے طالبات کو پرچہ حل کرنے میں مشکلات پیش آرہی ہیں ۔ وولٹیج میں کمی پر پنکھے بند ہیں پسینہ پرچہ پر گر رہا ہے جس سے پرچہ خراب ہو رہا ہے۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے نو ٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔حاصل پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق حاصل پور میں لوڈشیڈنگ ایک طرف تو بڑھتی ہوئی گرمی کے وجہ سے شہری پریشان تو دوسری جانب اذیت ناک لوڈشیڈنگ نے شہریوں کا جینا اجیرن کر دیا شہری علاقوں میں بارہ سے چودہ گھنٹے اور دہی علاقوں میں سولہ تا اٹھارہ گھنٹے تک لوڈشیڈنگ کا دورانیہ پہنچ گیا جس کی وجہ سے تاجروں ،صنعتکاروں کے کاروبار ٹھپ ہو کر رہے گئے ہیں ۔حکومتی دعوئے صرف دعوئے ہی رہے گئے ن لیگ کی حکومت نے جو عوام کو لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا جو ٹارگٹ دیا تھا اس پر تو عمل درآمد تو دور کی بات بلکہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ پہلے سے بھی زیادہ ہو گیا ہے ۔ شہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ خدارہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم کیا جائے۔

لوڈشیڈنگ

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...