سول ہسپتال , خاتون پیٹ میں تولیہ بھولنے پر ڈاکٹرز کیخلاف عدالت پہنچ گئی

سول ہسپتال , خاتون پیٹ میں تولیہ بھولنے پر ڈاکٹرز کیخلاف عدالت پہنچ گئی
سول ہسپتال , خاتون پیٹ میں تولیہ بھولنے پر ڈاکٹرز کیخلاف عدالت پہنچ گئی

  


 کراچی(ویب ڈیسک)  سول ہسپتال کے ڈاکٹر دوران آپریشن خاتون کے پیٹ میں تولیہ بھول گئے، سول ہسپتال کی انتظامیہ نے دوبارہ علاج کرنے سے انکار کردیا اور ذمے داروں کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے خاتون کو ہی دھمکی دیدی، نجی ہسپتال سے آپریشن کراکر تولیہ نکالا گیا، ایس ایچ او تھانہ رسالہ کو کارروائی کیلئے درخواست دی لیکن پولیس نے کارروائی کرنے سے انکار کردیا، متاثرہ خاتون نے عدالت سے رجوع کرلیا۔

طور خم بارڈر پر صورتحال دوسرے روز بھی کشیدہ، پاک افغان افواج آمنے سامنے، تازہ دم دستے، ٹینک بھی پہنچا دئیے

تفصیلات کے مطابق بلدیہ ٹاؤن کی رہائشی مسماۃ نجمہ رضوان عطاری نے وکیل سیف الدین اعوان کے ذریعے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جنوبی امداد حسین کھوسو کی عدالت میں ضابطہ فوجداری کی ایکٹ 22/Aکے تحت دائر درخواست میں ایس ایچ او رسالہ،سول ہسپتال کے ایم ایس اورانتظامیہ کو فریق بنایا اور موقف اختیار کیا ہے کہ چند ماہ قبل وہ بچے کی ڈیلیوری کے لیے گائنی وارڈ سول ہسپتال میں داخل ہوئی تھیں ، ہسپتال کے گائنی وارڈ کی ڈاکٹرز نے بچے کی پیدائش کیلیے آپریشن کیا ،دوران آپریشن وہ پیٹ سے تولیہ نکالنا بھول گئے ،چند روز بعد اسے ڈسچارج کردیا گیا تھا لیکن تکلیف بڑھتی گئی چلنے بیٹھنے سے قاصر ہوئی ۔

پاکستانیوں کیلئے بچت کا شاندارموقع، ویب سائٹ آگئی ، تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

دوبارہ ہسپتال انتظامیہ سے رابطہ کیا لیکن انھوں نے ٹال مٹول سے کام لیا تمام ایکسرے، الٹراساؤنڈ دیگر ٹیسٹ سے پیٹ میں کپڑے کی موجودگی کا انکشاف ہوا لیکن سول ہسپتال انتظامیہ نے دوبارہ آپریشن کیا اور نہ ہی ذمے داروں کے خلاف کوئی کارروائی کی ،بعدازاں ایک نجی ہسپتال سے لاکھوں روپے کے اخراجات برداشت کرکے آپریشن کرایا اور تولیہ نکلوایا تھا، اس کی تحریری درخواست اور لیگل نوٹس ایم ایس سول ہسپتال کو دیا لیکن انھوں نے جواب میں اس کے شوہررضوان عطاری کو کہا کہ جو کرنا ہے کرلو اگرسول ہسپتال کے خلاف کوئی کارروائی کرنا چاہتے ہو وہ خود اسے وکیل فراہم کرسکتے ہیں اور دھمکی دیکر بھگا دیا ،عدالت نے ایس ایچ او کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا ہے۔

مزید : کراچی


loading...