22سالہ امریکی ماں نے نوزائیدہ بچے کو ٹوائلٹ میں بہانے کی ناکام کوشش کے بعد کوڑے دان میں پھینک دیا

22سالہ امریکی ماں نے نوزائیدہ بچے کو ٹوائلٹ میں بہانے کی ناکام کوشش کے بعد ...
22سالہ امریکی ماں نے نوزائیدہ بچے کو ٹوائلٹ میں بہانے کی ناکام کوشش کے بعد کوڑے دان میں پھینک دیا

  


لووا(مانیٹرنگ ڈیسک)22سالہ امریکی ماں نے اپنے نوزائیدہ بچے کو ٹوائلٹ میں بہانے کی ناکام کوشش کے بعد کوڑے دان میں پھینک دیا ۔ ڈیلی میل کے مطابق ایشلے ہوٹزین ریڈر نے اتوار کے روز امریکہ کی یونیورسٹی آف لووا کے ہسپتال کے ریسٹ روم میں بچے کو جنم دیا ۔ یورنیورسٹی آف لوواپولیس کے مطابق 22سالہ ایشلے نے یونیورسٹی کے ٹوائلٹ میں بچے کو جنم دینے کے بعد ٹوائلٹ میں اپنے نوزائیدہ بچے کو بہانے کی کوشش کی اور پھر بچے کو تکیے کے غلاف میں ڈال کر کوڑے دان کے ڈبے میں پھینک دیا ۔تاہم ہسپتال کے عملے نے نوزائیدہ بچے کو وہاں سے زندہ برآمد کر لیا لیکن بچے کی حالت غیر مستحکم ہے ۔

دوران پرواز خاتون کی نیت میں ’فتور ‘آگیا،ساتھی خاتون سے ایسی حرکت کہ پولیس کو بلانا پڑا

لڑکی مبینہ طور پر لووا یونیورسٹی کے ریسٹ روم میں بچے کو جنم دینے کے پہلے ٹوائلٹ اور پھر ٹریش کین میں پھینکنے کے بعد فرار ہو گئی تھی تاہم پولیس نے بعد ازاں اسے گرفتار کر لیا ۔

لڑکی نے شرمناک فعل کے بعد اپنا جرم چھپانے کا دلچسپ حربہ پولیس کے سامنے پیش کیا ہے کہ اُسے محسوس ہی نہیں ہوا کہ وہ حاملہ تھی اور میں نے سوچا کہ بچہ پیدائشی طور پر مردہ پیدا ہوا ہے کیونکہ وہ پیدائش کے وقت رویا نہیں تھا ۔ ایشلے کو گرفتاری کے بعد جانسن کاﺅنٹی جیل میں بھیج دیا گیا تاہم منگل کے روز اسے رہا کر دیا گیا ہے ۔

امریکا میں نابینا ماں کی بیٹی کو عروسی جوڑے میں دیکھنے کی خواہش پوری ہوگئی

ڈبلیو ایچ او ٹی وی کی رپورٹس کے مطابق آن لائن عدالتی ریکارڈ میں مئی 2015کا ایک حکم نامہ ظاہر کرتا ہے کہ ایشلے نے اپنی بچی کی حوالگی اور بچی کے لئے مدد فراہم کرنے کے لئے درخواست دائر کی تھی ۔خیال ہے کہ ایشلے نے 2014ءمیں بچی کو جنم دیا تھا ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...