تیونسی باشندہ نومنتخب فرانسیسی صدر کا نان بائی بننے کے لیے تیار

تیونسی باشندہ نومنتخب فرانسیسی صدر کا نان بائی بننے کے لیے تیار

پیرس(این این آئی)رواں ہفتے فرانس کے نو منتخب صدر عمانوایل ماکروں کے سینئر معاونین دارالحکومت پیرس میں ایک معروف بیکری کے تیونسی نژاد مالک شامی بوعتور سے ملاقات کریں گے۔ ملاقات کا مقصد پیرس کی بلدیہ اور فرانسیسی ایوان صدارت کے درمیان طے پائے گئے نئے معاہدے پر عمل درآمد کا جائزہ لینا ہے۔ اس معاہدے کے تحت الیزے محل کو عبتور کی بیکری سے روٹی اور دیگر متعلقہ مصنوعات فراہم کی جائیں گی۔میڈیارپورٹس کے مطابق باگت فرانس میں قومی سطح پر انتہائی معروف روٹی ہے جس کی لمبائی 55 سے 65 سینٹی میٹر ہوتی ہے جب کہ وزن 250 سے 300 گرام تک ہوتا ہے۔ اس کی تیاری کے لیے ایک کلو آٹے میں 18 گرام نمک ملایا جاتا ہے۔اس موقع پر سامی عبتور نے بتایا کہ الیزے محل سے ان کو کال موصول ہوئی جس میں مذکورہ معاہدے کے حوالے سے رواں ہفتے مقررہ ملاقات کے بارے میں بتایا گیا۔ سامی کے مطابق معاہدے کی مدت ایک سال ہے۔سامی کی تیار کردہ باگت کی شہرت نے ان کو مذکورہ روٹی کی تیاری کے سالانہ مقابلے میں شرکت کے لیے حوصلہ دیا۔ رواں سال اس مقابلے میں 250 سے زیادہ نان بنائیوں نے شرکت کی۔

مقابلہ جیتنے والے کو 4000 یورو کا مالی انعام دیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ ایک برس تک صدارتی محل میں روزانہ روٹی کی فراہمی کا معاہدہ بھی ملتا ہے۔ تاہم جیتنے والا اگلے تین برس تک مقابلے میں شریک نہیں ہو سکتا۔

مزید : عالمی منظر