اڑھائی سال گزر گئے ، نادرا کے میگا سنٹر کا افتتاح لٹک گیا ،سال دربدر

اڑھائی سال گزر گئے ، نادرا کے میگا سنٹر کا افتتاح لٹک گیا ،سال دربدر

لاہور( افضل افتخار)اڑھائی سال قبل کروڑوں روپے سے تیار ہونے والے نادرا کے میگا سینٹر کا افتتا ح نہ ہو سکا،شہری شناختی کارڈ بنوانے کیلئے پریشانی کا شکارتفصیلات کے مطابق شہریوں کے رش کو مدنظر رکھتے ہوئے تین سال قبل اسلام آباد طرز کا لاہور میں بھی میگا پراجیکٹ شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا جس کے لئے ڈیوس روڈ شملہ پہاڑی کے قریب امریکی قونصلیٹ اور گورنر ہاؤس کے قریب موجود مین روڈ پر پرانی عمارت لاکھوں روپے ماہانہ کرایہ پر حاصل کی گئی جبکہ اس کی تزئین و آرائش پر بھی کروڑوں روپے کی رقم خرچ کی جاچکی ہے یہاں پر باغبانپورہ نادرا سنٹر سمیت سوامی نگر مصری شاہ،راوی روڈ، شفیق آباد اور ایبٹ روڈ قلعہ گجر سنگھ کا دفتر ختم کرکے ایک ہی چھت تلے چار مختلف سنٹروں کو ضم کیا جانا ہے لیکن تاحال عوام کو ریلیف نہیں مل سکا بلکہ باغبانپورہ کا نادرا دفتر بند کردیا گیا جس کی وجہ سے یہاں کے ملحقہ لوگوں کو نئے شناختی کارڈ کے حصول اور اپنے مسائل کے حل کے لئے دھکے کھانے پڑرہے ہیں اور ان کی داد رسی کرنے والا کوئی نہیں جس سے انکے مسائل میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے اور اب ان کو اپنے کاموں کے لئے ایبٹ روڈ آنا پڑرہا ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عوامی سہولت کے میگا سنٹر کی تعمیر میں کروڑوں روپے گھپلوں کی شکایات پر نیشنل اینڈ ڈیٹا بیس رجسٹریشن اتھارٹی کی یونین نے چیئرمین نیب سمیت مختلف تحقیقاتی اداروں کو دفتر کی تزئین و آرائش پر خرچ ہونے والی رقم کا آڈٹ کروانے اور اس میں ملوث افراد کی نشاندھی کے لئے بھی درخواست دی مگر درخواست کو نظر انداز کر دیا گیا ۔ اس حوالے سے نادرا حکام کاکہنا ہے کہ ہمیں افتتاح کے بارے میں کوئی معلومات نہیں اس کافیصلہ وفاقی حکومت نے کرنا ہے اور جب وہ فیصلہ کریں گے توہم اس نئے دفتر میں کام شروع کردیں گے اس لئے ہمیں اس حوالے سے کچھ معلوم نہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا کام عوام کے مسائل حل کرنا ہے اور ہم اپنی استعداد کے مطابق کام کررہے ہیں

مزید : میٹروپولیٹن 1