پنجاب میں گردوں کی غیرقانونی فروخت عروج پر ، وزیر داخلہ کا نوٹس

پنجاب میں گردوں کی غیرقانونی فروخت عروج پر ، وزیر داخلہ کا نوٹس

لاہور(کرا ئم رپورٹر) وفا قی وزارت دا خلہ نے گر دو ں کی غیر قانو نی فروخت کے مکروہ دھند ے کا نو ٹس لیتے ہو ئے ایف آئی اے حکا م سے رپورٹ طلب کر لی ہے اور پنجاب میں گر دو ں کی غیر قا نو نی فرو خت اور پیو ند کا ری کو رو کنے میں ناکام ہو نے پر قا نو ن نافذ کر نے والے ادارو ں کی سخت سر زنش بھی کی گئی ہے ۔ ایک رپورٹ کے مطابق یہ گھناؤنا کاروبار پنجاب کے تمام اضلاع میں بڑے پیمانے پر ہو تا ہے اور اس گھناؤ نے کاروبار میں ڈاکٹرو ں کے علا وہ کئی دیگر لو گ بھی شا مل بیا ن کیے گئے ہیں۔ڈائر یکٹر ایف آئی اے پنجاب ڈا کٹر عثمان انور کے مطا بق انھو ں نے اس کا رو با ر میں ملوث ملز ما ن کی فہر ست مر تب کر لی ہے اور عنقر یب تما م ملز ما ن قا نو ن کی گر فت میں ہو ں گے۔ایک خفیہ رپورٹ کے مطا بق اس وقت پنجا ب میں 500سے زائدافراد جن میں خواتین بھی شا مل ہیں ان کو اغواکر نے کے بعد ان کے گردے نکا لنے کا انکشاف ہواہے جس پر قا نو ن نا فز کر نے والے ادارو ں نے ایسے ڈا کٹرو ں اور ان کے ساتھی ایجنٹو ں کی گر فتاری کے لیے وسیع پیمانے پر آپریشن کرنے کی تیاریاں شروع کردی ہیں۔ جبکہ گردہ مافیا کے سرپرست اعلیٰ غیر ملکین و دیگر ایجنٹوں کے خلاف بھی ابتدائی تفتیشی رپورٹیں ان کے سفارتخانوں میں بجھوائی جارہی ہیں زرائع کے مطابق پنجاب میں انسانی گردے کی غیرقانونی پیوندکاری کرنے کا غیر قانونی کاروبار طویل عرصے سے چلا آرہا ہے۔ زرائع کا کہنا ہے کہ لاہور کے معروف پوش علاقوں میں واقع کوٹھی اور بنگلوں میں بااثر ڈاکٹر نے اپنے پرائیویٹ خفیہ کلینک بنا رکھے ہیں جس کی منتھلی مقامی پولیس کو بجھوائی جاتی ہے ان غیر قانونی کلینکس میں دیگر ملکوں کویت، دبئی، سعودی عرب اور قطر سے آنے والے مریضوں کی پیوندکاری کی جاتی ہے۔ سرکاری ہسپتالوں کے پروفیسر، ڈاکٹر بھاری رقم وصول کرکے مریضوں کی پیوندکاری کرتے ہیں ۔ ایف آئی اے حکا م کے مطا بق انھو ں نے گردوں کی غیر قانو نی پیو ند کا ری میں ملو ث کئی ایک گروہو ں کو گر فتا ر بھی کر لیا ہے ۔

مزید : صفحہ آخر