رنگ روڈکے توسیعی منصوبے کیخلاف حکم امتناعی واپس لینے کی درخواست پر نوٹس

رنگ روڈکے توسیعی منصوبے کیخلاف حکم امتناعی واپس لینے کی درخواست پر نوٹس

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہورہائیکورٹ میں رنگ روڈ لاہور کے توسیعی منصوبے کے خلاف حکم امتناعی واپس لینے کی درخواست پر نوٹس جاری کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو بحث کے لئے طلب کرلیا ہے۔ جسٹس امین الدین خان نے رنگ روڈ اتھارٹی کی جانب سے دائرمتفرق درخواست پرسماعت کی۔کمشنرعبداللہ سمبل بھی عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔عدالت میں رنگ روڈ اتھارٹی کی جانب سے مشتاق احمد خان اوراحمد اویس ایڈووکیٹس نے موقف اختیارکیا کہ مفاد عامہ کے تحت سدرن لوپ منصوبہ شروع کیا۔20 ارب روپے کی لاگت سے 12 کلومیٹر سیزائد رنگ روڈ بنائی جارہی ہے۔مالکان کی اراضی ایکوائر کرنے کے لئے تمام قانونی تقاضے پورے کیے اورکئی اراضی مالکان کومعاوضہ کی ادئیگی بھی کی گئی لیکن بعض اراضی مالکان نے عدالت سے منصوبے کی کنسٹریشن اورمعاوضہ کی ادائیگی کے حوالے سے حکم امتناعی حاصل کرلیا ہے۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ رنگ روڈ منصوبے کے حوالے سے دیا گیا حکم امتناعی واپس لیا جائے۔عدالت میں بحریہ ٹاؤن کی جانب سے اظہرصدیق سمیت دیگروکلاء نے موقف اختیارکیا کہ اراضی کو ایکوائرکرنے کے لئے قانونی تقاضے پورے نہیں کئے گئے اورنہ ہی متاثرین کوپورا معاوضہ دیا گیا،انہوں نے ہنگامی بنیادوں پر زمین ہنگامی پر زمین ایکوائر کی اورحکم امتناعی کے باوجود رنگ روڈ اتھارٹی نے متاثرین کے لئے ایوارڈ کا اعلان کیا۔

مزید : صفحہ آخر