میانی صاحب میں قبروں کے احاطوں سے متعلق پالیسی بنانے کی مہلت

میانی صاحب میں قبروں کے احاطوں سے متعلق پالیسی بنانے کی مہلت

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہورہائیکورٹ نے میانی صاحب قبرستان میں قبروں کے احاطوں سے متعلق 16جون تک پالیسی بنانے کی مہلت دے دی ۔جسٹس محمدفرخ عرفان خان اورجسٹس حبیب اللہ عامرپرمشتمل دورکنی بنچ نے میانی صاحب قبرستان کمیٹی کی انٹراکورٹ اپیل پرسماعت کی،عدالتی حکم پرڈپٹی کمشنر سمیر احمدسیدپیش ہوئے۔ڈپٹی کمشنرنے میانی صاحب قبرستان کمیٹی کے حوالے سے رپورٹ پیش کرتے ہوئے عدالت کوبتایاکہ میانی صاحب قبرستان کی بارہ سو کینال اراضی ہے جبکہ قبضہ مافیا سے 31کینال اراضی واگزار کرالی گئی ہے ۔میانی صاحب قبرستان کی اراضی کی بعض لوگوں کے پاس رجسٹریاں ہیں جن کی تصدیق کررہے ہیں۔ڈی سی کا کہناتھاکہ عدالتی حکم پرمیانی قبرستان کے اندر سکیورٹی کااہتمام کیاگیا۔انہوں نے عدالت کے استفسارپربتایاکہ 24مسلح سکیورٹی گارڈ24گھنٹے میانی صاحب قبرستان میں ڈیوٹی کررہے ہیں۔فاضل عدالت نے ڈی سی کوحکم دیاکہ وہ میانی صاحب قبرستان سے نشہ بازوں سمیت دیگرغیرمتعلقہ افرادکے انخلاء کے لئے ضروری اقدامات کو یقینی بنایاجائے۔عدالت نے کیس کی سماعت 14جون تک ملتوی کرتے ہوئے میانی صاحب قبرستان میں احاطوں کی پالیسی مرتب کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔

مزید : صفحہ آخر