رسول بخش پھلپھوٹو، ڈاکٹر ظفر اقبال، بینظیر آباد افسران کیخلاف ریفرنس، انکوائریوں کا فیصلہ

رسول بخش پھلپھوٹو، ڈاکٹر ظفر اقبال، بینظیر آباد افسران کیخلاف ریفرنس، ...

اسلام آباد ( آن لائن ) قومی احتساب بیورو (نیب) نے غیر قانونی بھرتیوں میں ملوث سابق ایم ڈی پی ایچ اے فاؤنڈیشن رسول بخش پھلپھو ٹو کیخلاف بدعنوانی ریفرنس، لاہور میں غیر قانونی سب کیمپس کھولنے پر سابق وی سی وفاقی اردو یونیورسٹی برائے سائنس و ٹیکنا لو جی ڈاکٹر ظفر اقبال، روہڑی مین کینال پختگی منصوبے میں سرکاری فنڈز کی خورد برد میں ملوث ہونے پر ڈی اے ڈی ڈویژن ضلع شہید بینظیر آباد کے افسران کیخلاف انوسٹی گیشن اور 25 ارب 24 کروڑ روپے کی مشتبہ بینک ٹرانزیکشن پر محمد آصف کیخلاف انکوائری کا فیصلہ کیا ہے ۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس میں سابق منیجنگ ڈائریکٹر،چیف ایگزیکٹو آفیسر پی ایچ اے فاؤنڈیشن رسول بخش پھلپھوٹو و دیگر کیخلاف بدعنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی گئی۔ ملزمان پر اختیارات کے ناجائز استعمال کے ذریعے 400 سے 500 غیر قانونی بھرتیوں کا الزام ہے۔ ایگزیکٹو بورڈ نے سابق وائس چانسلر وفاقی اردو یونیورسٹی برائے آرٹس، سائنس و ٹیکنالوجی ڈاکٹر ظفر اقبال، سب کیمپس لاہور کی انتظامیہ و دیگر کیخلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی۔ ملزمان پر جامعہ میں لاہور میں غیر قانونی سب کیمپس کھولنے، بدعنوانی، اختیارات کے ناجائز استعمال اور ذاتی فوائد حاصل کرنے کا الزام ہے۔ اجلاس میں ڈی اے ڈی ڈویژن ضلع شہید بینظیر آباد کے افسران کیخلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی گئی۔ ملزمان پر روہڑی مین کینال کو پختہ کرنے کے منصوبے میں اختیارات کے ناجائز استعمال اور ٹھیکے دینے میں بدعنوانی اور سرکاری فنڈز میں خورد برد کا الزام ہے۔ اجلاس میں سی ڈی اے افسران کیخلاف بھی انوسٹی گیشن کی منظوری دی گئی۔ یہ کیس نیب کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے بھیجا۔ ملزمان پر قواعد و ضوابط کے بغیر منصوبہ رو کنے ، ایڈوانس میں دی گئی رقوم کی عدم واپسی اور اختیارات کے ناجائز استعمال اور کلچرل کمپلیکس شکر پڑیاں اسلام آباد کے منصوبہ کی تعمیر میں اخراجات کے استعمال میں ضیاع کا الزام ہے جس سے قومی خزانے کو 168.904 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ اجلاس میں وی سی زرعی یو نیو رسٹی فیصل آباد ڈاکٹر اقرار احمد خان کیخلاف انکوائری کی منظوری دی گئی۔ ملزم پر اختیارات کے ناجائز استعمال، مالی خورد برد اور بھرتیوں میں قواعد کی خلاف ورزی کا الزام ہے۔ اجلاس میں اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی طرف سے بھجوائے گئے کیس میں25.247ارب رو پے کی مشتبہ ٹرانسزیکشن رپورٹ پر محمد آصف ولد فیاض حسین و د یگر جبکہ پروونشل ہائی ویز ڈویژن سکھر، ولی محمد شیخ و دیگر کیخلاف بھی انکوائریوں کی منظوری دی گئی۔ ملزمان پر ناجائز ذرائع سے اثاثے بنانے اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے۔ اجلاس میں عدم ثبوت کی بناء پر وزیر بہبود آبادی سندھ سید مردان علی شاہ کیخلاف انکوائری اور سپرنٹنڈنٹ انجینئر محکمہ آبپاشی مسعود انور چغتائی و دیگر کیخلاف انکوائری بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اس موقع پر چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری نے تمام افسران کو ہدایت کی کہ وہ شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریوں اور انویسٹی گیشن قانون کے مطابق نمٹائیں۔

مزید : صفحہ آخر