بھارتی پولیس نے 17سالہ بچے کیساتھ بدفعلی کی کوشش اور شادی کا مطالبہ کرنے والے 35سالہ شخص کو گرفتار کر لیا

بھارتی پولیس نے 17سالہ بچے کیساتھ بدفعلی کی کوشش اور شادی کا مطالبہ کرنے والے ...
بھارتی پولیس نے 17سالہ بچے کیساتھ بدفعلی کی کوشش اور شادی کا مطالبہ کرنے والے 35سالہ شخص کو گرفتار کر لیا

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) بھارتی پولیس نے 17سالہ بچے سے جنسی زیادتی اور شادی کا مطالبہ کرنے والے 35سالہ شخص کو گرفتار کر لیا ۔

”دی ٹائمز آف انڈیا “ کے مطابق بھارتی پولیس نے 17سالہ طالب علم کیساتھ بدفعلی کرنے، موبائل فون پر فحش فلمیں دکھانے اور پھر شادی کا مطالبہ کرنے والے 35سالہ شاداب نامی ملزم کو گرفتار کر لیا ۔

متاثرہ بچہ ممبئی کے ایک کالج میں ڈیرزل مکینک کا ڈپلومہ لے رہا ہے جس نے اپنے ساتھ پیش آنے والے واقعے کا تذکرہ والدین کے ساتھ کیا جنہوں نے پولیس کو آگاہ کر دیا جس کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

پولیس حکام کے مطابق متاثرہ بچے نے اپنے بیان میں بتایا کہ وہ ملزم سے ایک جم میں ملا اور پھر دونوں میں دوستی ہو گئی ۔”شاداب نے ایک روز مجھے فیس بک پر پیغام بھیج کر اجمیر شریف پر جانے کے بارے میں پوچھا “۔

اس نے پولیس کو مزید بتایا کہ اجمیر پہنچنے پر شاداب نے ایک ہوٹل میں کمرہ بک کرایا اور جونہی ہم کمرے میں داخل ہوئے تو اس نے میرا بوسہ لینے ، کپڑ ے اتارنے اور فحش فلمیں دکھانے کی کوشش کی مگر میں شور مچاتا ہوا بھاگ کر باہر نکل آیا۔”اس نے مجھے یقین دہانی کرائی کہ آئندہ ایسا نہیں ہو گا“۔

طالب علم کا کہنا تھا کہ اگلے روز ہم اجمیر کی مارکیٹ گئے تو شاداب نے کہا کہ مجھے خواتین والے کپڑے پہننے چاہئیں جبکہ اس نے میرے ساتھ شادی کرنے کی خواہش کا اظہار بھی کیا ۔ ”میں نے اسے کہا کہ میرے امتخانات ہیں لہذٰا واپس جانا چاہتا ہوں “۔

پولیس کے مطابق پچھلے ہفتے ملزم نے بچے کو ریلوے سٹیشن پر بلایا اور اسے چومنے کی کوشش کی اور شادی کیلئے اصرار کیا تاہم اس کے ستانے پر بچے نے سارا ماجرہ اپنے والدین کے سامنے بیان کر دیا جس کے بعد ملزم کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ۔

مزید : بین الاقوامی