خدمت خلق میرے لئے عبادت کا درجہ رکھتی ہے: چودھری نورالحسن تنویر

خدمت خلق میرے لئے عبادت کا درجہ رکھتی ہے: چودھری نورالحسن تنویر
خدمت خلق میرے لئے عبادت کا درجہ رکھتی ہے: چودھری نورالحسن تنویر

  


دبئی (طاہر منیر طاہر)محض اللہ کی رضا اور خوشنودی حاصل کرنے کیلئے اگر خلق خدا کی خدمت کی جائے تو وہ رائیگاں نہیں جاتی۔ اللہ کے ہاں یہ عبادت قبولیت تو پاتی ہے لیکن خلق خدا بھی اسے یاد رکھتی ہے، اپنے لیے تواس دنیا میں سب ہی بہت کچھ کرتے ہیں لیکن مزہ تب ہے کہ خلق خدا کے بارے میں سوچا جا ئے اور ان کی بھلائی کیلئے کچھ کیا جائے۔خدمت خلق اور انسانی بھلائی کا جذبہ رکھنے والی ایک شخصیت چودھری نورالحسن تنویر کو گزشتہ روز ان کی ملکی، ملی ، قومی ، علمی ، ادبی، دینی اور سماجی بہبود کی خدمات سرانجام دینے پر ایک خوبصورت تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے لوگوں نے بھرپور شرکت کی اور انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ چودھری نورالحسن تنویر کے اعزاز میں منعقد اس تقریب پذیرائی کا اہتمام فرزانہ کو ثر، فرزانہ چغتائی، فرزانہ منصور، فاریحہ فاروقی، میان منیر ہانس، خواجہ عبدالوحیدپال ، تابش زیدی اور ان کے دوستوں نے مل جل کر کیا تھا۔

تقریب پذیرائی میں چودھری محمد الطاف ، چودھری محمد صدیق، چودھری منیر انور، چودھری شاہد جمیل، خلیل بونیری، راجہ اکرام الحق، چودھری ظفر اقبال، چودھری محمد شفیع، طاہر بھنڈر، رضاشاہد، ملک خادم شاہین، ملک شہزاد، چودھری عبدالواحد، ڈاکٹر محمد اکرم شہزاد، محمد افتخار بٹ ، چودھری عبدالغفار ، چودھری خالد بشیر، حاجی محمد نواز، شاہد اقبال، رابعہ کامران جنجوعہ، ملک یونس، عظمت شیرخان، غلام مصطفی نہرا، عبدالرحیم نوش، عباس رضا ڈار، رضوان عبداللہ، ذوالفقار شاہ رانا محمد ارشد ، مدثر خوشنود، شیراز مغل، خالد گوندل اور پرنٹ و الیکٹرانگ میڈیا کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔ اس موقع پر مقررین نے خطاب کیا اور چودھری نورالحسن تنویر کے کارہائے نمایاں پر روشنی ڈالی۔ مقررین نے کہا کہ چودھری نورالحسن تنویر بیرون ملک اوورسیز پاکستانیوں کی پہچان ہیں۔ وہ بیک وقت پاکستان مسلم لیگ ن گلف ریجن کے صدر، اوورسیز پاکستانیز یونائیٹڈ فورم متحدہ عرب امارات کے صدر ،ممبر بورڈ آف گورنرز اوورسیز پاکستانیز فاﺅنڈیشن اور ممبر اوورسیز پاکستانیز کمیشن پنجاب کے عہدوں پر ذمہداری سے کام کر رہے ہیں۔

چودھری نورالحسن تنویر متحدہ عرب امارات آنے سے قبل سعودی عرب میں مقیم تھے جہاں اُنہوں نے پاکستانی کمیونٹی کے مئے گراں قدر خدمات سرانجام دیں، آج سے 12 سال قبل جب وہ متحدہ عرب امارات تشریف لائے تو عوامی فلاح و بہبود کا سلسلہ یہاں بھی شروع کر دیا۔ چودھری نورالحسن تنویر نے پاکستانی کمیونٹی کو ایک پلیٹ فارم پر متحدہ کرنے کیلئے انتھک محنت اور کوشش کی اور ان کے مسائل کے حل کیلئے انفرادی طور پر بھی بہت کا م کیا۔ پاکستانی کمیونٹی کو متحدہ کرنے کیلئے چودھری نورالحسن تنویر نے اوورسیز پاکستانیز یونائیٹڈ فورم OPUF متحدہ عرب امارات گرانقدر خدمات انجام دیں جبکہ OPE کے بورڈ آف گورنرز کا ممبر ہوتے ہوئے پورے گلف ریجن میں بہت سے لوگوں کو DPAC کا ممبر بنوایا جبکہ پنجاب کی سطح پر بہت سے لوگوں کو DPCکی ایڈوائزری کو نسل کا ممبر بنایا تاکہ یہ لوگ OPCاور OPC کے ساتھ مل کر کام کر سکیں اور اپنے انفرادی و اجتماعی مسائل حل کر سکیں ۔ چودھری نورالحسن تنویر کی اس کوشش سے OPF اور OPC کے بند دریچے سب پر کھل گئے اور اب سیکرٹری ممبران OPC اور OPF کے ساتھ مسائل کے حل کیلئے باہم جڑ گئے۔ چودھری نورالحسن تنویر کی قومی، ملکی، ملی، علمی، ادبی، دینی اور سماجی بہبود کیلئے خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں،نہ صرف امارات میںبلکہ پاکستان میں بھی ان کی فلاحی سروسز کا سلسلہ جاری ہے۔ سیاسی میدان میں بھی آپ نے گرانقدر خدمات سرانجام دی ہیں یہی وجہ ہے کہ پاکستان کے سیاسی حلقوں میں ان کا طوطی بولتا ہے۔ قومی اور ملکی مفاد کے مد نظر متعدد فیصلے چودھری نورالحسن تنویر کی سفارش پر کئے گئے ہیں۔ ہر قومی دن ، قومی تہوا ر اور دینی مجالس کے انعقاد پر آپ صف اول میں کھڑے نظرآتے ہیں یہی وجہ ہے کہ امارات میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی پسندیدہ شخصیت ہیں۔ چودھری نورالحسن تنویر کی خوہش ہے کہ وہ ہر طبقہ فکر کے لوگوں کی بلا تفریق او امتیاز خدمت کریں اس سلسلہ میں وہ اپنے علاقہ میں ایک سیکڑٹریٹ قائم کرنے جا رہے ہیں جہاں ہر کسی کی مد د کی جائے گی۔ تقریب کے آخر میں چودھری نورالحسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے اعزاز میں منعقد اس تقریب کی آرگنائزنگ کمیٹی کے ارکان کا شکریہ ادا کرتے ہیں اور اس بات کا اعادہ کرتے ہیں کہ وہ عوام الناس کی امیدوں پر پورا اُترنے کی کوشش کریں گے۔ آرگنائزنگ کمیٹی کی طرف سے محمد غوث قادری، شہزاد بٹ ، احمد شیخانی اور شرکاءکے تقریب کا شکریہ ادا کیا گیا۔ تقریب کے آخر میں مہمانوں کی تواضع پر تکلف ڈنر سے کی گئی۔

مزید : عرب دنیا