چمن، باب دوستی چھٹے روز بھی بند،20بیمارافرادکو افغانستان بھیج دیا گیا

11 مئی 2017 (13:51)

چمن(ویب ڈیسک)پاک افغان کشیدگی کی وجہ سے باب دوستی پر ہر قسم کی آمدورفت بدھ کو چھٹے روز بھی بند رہی,انسانی ہمدردری کی بنیادوں پر بیمار افغان شہریوں کو سفری دستاویزات پر واپس جانے دیا جارہا ہے,دو روز کے دوران بیس افغان شہری واپس جاچکے ہیں۔

باب دوستی کی بندش کے باعث پاک افغان تجارتی سرگرمیاں معطل ہیں ، نیٹو سپلائی افغان ٹرانزٹ ٹریڈ بھی بند ہے۔ایف آئی اے ذرائع کے مطابق دو روز میں 20سے زائد بیمارافغان شہری ویزاپاسپورٹ پر واپس جاچکے ہیں۔ادھر پاک افغان حکام کے درمیان کلی لقمان اور کلی جہانگیر میں سرحدی حدود کے تعین کا سروے مکمل ہونے کے بعد رپورٹ آنے کا انتظار ہے دونوں دیہات میں مردم شماری کا عمل بھی رکا ہوا ہے۔ کلی لقمان اور کلی جہانگیر مکمل طور پر پاک فوج کے کنٹرول میں ہے جبکہ سرحد پر پاک فوج نے بھاری توپ خانہ نصب کردیا ہے۔

وزیراعظم نے ڈان لیکس کمیٹی کی متفقہ سفارشات کی منظوری دیدی، وزارت داخلہ کا اعلامیہ جاری

پاک افغان سرحد پر کشیدگی کے بعد سرحدی دیہات کے لوگوں کو چمن میں خیمہ بستی میں ٹھہرایا گیا اور متاثرہ افراد میں ایک سال پرانا راشن تقسیم کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے تازہ راشن تقسیم کیاگیا اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر قیصر خان ناصرنے اے سی قلعہ عبداللہ کی نگرانی میں تین رکنی کمیٹی قائم کر دی جس میں ڈی ایس پی چمن اور پی ڈی ایم اے کا نمائندہ شامل ہو گا کمیٹی کی رپورٹ آنے کے بعد ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ دوسری جانب پاک افغان کشیدگی کے باعث اقوام متحدہ کےادارہ برائے پناہ گزین نےافغان مہاجرین کی چمن کے راستے وطن واپسی کا آپریشن معطل کردیا ہے۔

مزیدخبریں