سکولوں میں اب یہ چیز فروخت نہیں ہو سکے گی ،حکومت نے طلبہ کی سب سے پسندیدہ چیز پر پابندی عائد کردی

سکولوں میں اب یہ چیز فروخت نہیں ہو سکے گی ،حکومت نے طلبہ کی سب سے پسندیدہ چیز ...
سکولوں میں اب یہ چیز فروخت نہیں ہو سکے گی ،حکومت نے طلبہ کی سب سے پسندیدہ چیز پر پابندی عائد کردی

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے سکولوں میں کولڈ درنکس پابندی کے حوالے سے کی گئی قانون سازی سے تفصیلی طور پرآگاہ کرنے کے لیے کولڈ ڈرنکس اور مشروب ساز کمپنیوں سمیت تمام سٹیک ہولڈرز سے ملاقات کی گئی۔

سٹیک ہولڈرز کو سکولوں میں تمام قسم کی کاربونیٹیڈ ڈرنکس پر پابندی کے متعلق آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ ریڈ زون میں شامل تمام اشیاء جیسا کہ کاربونیٹڈ ڈرنکس اور انرجی ڈرنکس وغیرہ کی سکولوں کے اندر اور سکولوں کی حدودکے 100 میٹر کے احاطے کے اندر فروخت پر مکمل پابندی عائدہو گی۔ پابندی کا اطلاق گرمیوں کی چھٹیوں کے فورا بعد سے ہو گا۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے پابندی کی وجوہات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ کاربونیٹڈکولڈ ڈرنکس کے استعمال سے بچوں میں ہڈیوں سمیت جسمانی نشوونما متاثر ہوتی ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ سکولوں میں پنجاب فوڈ اتھارٹی گرین زون میں شامل مصنوعات، پھل، ملک شیک، فروٹ چاٹ، دودھ اور دہی سے بنی اشیاء کی اجازت ہو گی۔ علاوہ ازیں ملاقات میں کولڈڈرنکس اور مشروبات میں مضر صحت رنگوں کے استعمال کا معاملہ بھی زیر بحث آیا ۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل نے کولڈ درنکس سمیت تمام مشروبات کے اجزا اور معیار کو قوانین کے مطابق بنانے کے لیے تمام کمپنیوں کو 2 ماہ کی مہلت دی۔ 2 ماہ کے اندر تمام اجزاء پنجاب فوڈ سیفٹی ریگولیشن 2017 کے مطابق بنانے کے احکامات جاری کیے۔ اس حوالے سے ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل کا کہنا تھا کہ مشروبات میں منظور شدہ فوڈ کلرز کا استعمال نا کرنے پر لائسنس منسوخی سمیت سخت کاروائی کی جائے گی۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں ہونے والی ملاقات میں نیسلے، پیپسی، کوکا کولا، آر سی، قرشی انڈسٹری، مچلز اور دیگر سٹیک ہولڈرز نے شرکت کی اور پنجاب فوڈ اتھارٹی سیفٹی اینڈ سٹینڈرڈ ریگولیشنز2017ء پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے تمام قوانین پر عمل درآمد یقینی دہانی کروائی۔

مزید : لاہور