PIAہیڈ کوارٹر کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنیکا حتمی فیصلہ

PIAہیڈ کوارٹر کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنیکا حتمی فیصلہ

  

ملتان (نیوز رپورٹر) قومی ائیر لائن (پی آئی اے) کی نئی مینجمنٹ نے ائیر لائن کے ہیڈ کوارٹر کو کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنے کا حتمی فیصلہ کیاگیاہے۔ پہلے مرحلہ میں کراچی سمیت مختلف سٹیشنز سے شعبہ ایچ آر کے 80 سے زائد ملازمین کا اسلام آباد ٹرانسفر کردیا گیا اسی طرح عید الفطر کے بعد (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

پی آئی اے کا فنانس ڈیپارٹمنٹ بھی مکمل طور پر اسلام آباد منتقل کردیا جائے گا ذرائع کے مطابق ایم ڈی ائیر مارشل ارشد ملک اور ان کی ٹیم قومی ائیر لائن کو پہلے والی ٹاپ ٹین کی پوزیشن میں لانے کے لئے روزانہ کی بنیاد پر اصلاحات پر عمل پیرا ہیں اور انہی اصلاحات کے تحت پی آئی اے کے افسران کو میٹنگ کے لئے کراچی بلانے اور ٹی اے ڈی اے کا خاتمہ کرکے ویڈیو لنک کانفرنس کا آغاز کیا گیا ہے اور قومی ائیر لائن کو نئے روٹس پر چلانے کے لئے رواں سال کے آخر تک پی آئی اے کے فضائی بیڑے میں 18 نئے طیارے شامل ہوجائیں جن میں 5 طیارے 777 شامل ہیں ذرائع نے بتایا کہ 1997ئ میں جب ایم این اے شاہد خاقان عباسی کو پی ائی اے کا ایم ڈی بنایا گیا تو قومی ائیر لائن کا خسارہ 6 ارب روپے تھا جبکہ دو سال کے عرصہ میں یہ خسارہ 6 ارب سے بڑھ کر 30 ارب روپے کی سطح پر جا پہنچا پی آئی اے میں دو جماعتوں کی جانب سے کی جانیوالی سیاسی تعیناتیوں نے خسارے کے حجم میں بتدریج اضافہ کیا ہے جو آج 400 ارب روپے سے بھی تجاوز کرچکا ہے تاہم نئی انتظامیہ نے قومی ائیر لائن کو ازسر نو بہتری کی جانب گامزن کرنے کے لئے جامع اقدامات اٹھائے ہیں ذرائع کے مطابق 2019ئ کے اواخر تک پی آئی اے کے فضائی بیڑے میں 18 نئے طیاروں کی شمولیت سے ملتان سمیت ملک بھر سے نئے روٹس متعارف کروائے جائیں گے اور ملتان سے جدہ اور مدینہ کے لئے بھی روزانہ کی بنیاد پر پروازوں کا آغاز کیا جائے گا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -