کار رینٹل پاور کیس ، ملزم شیرملک کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع 

  کار رینٹل پاور کیس ، ملزم شیرملک کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع 

  

 اسلام آباد (این این آئی) اسلام آباد کی احتساب عدالت نے کار کے رینٹل پاور کیس میں ملزم شیرملک کے جسمانی ریمانڈ میں 13 مئی تک توسیع کردی ۔ گزشتہ روزکار کے رینٹل پاور کیس ملزم محمد شیرملک کو جج ارشد ملک کی عدالت میں پیش کیا گیا ۔ نیب کی جانب سے ملزم کے جسمانی ریمانڈکی استدعا کی گئی ۔وکیل ملزم محمد شیر ملک نے کہاکہ 2018میں نام ای سی ایل ڈالاگیا اس وقت گرفتارکیوں نہ کیا۔ وکیل صفائی نے کہاکہ تین کال اپ نوٹس ہوئے کچھ ثابت نہ ہوسکا ابھی مزید ریمانڈ مانگ رہے ہیں۔ وکیل ملزم نے کہاکہ دوران تفتیش راجہ بابر زوالقرنین سے رشتہ داری کو پوچھتے رہے۔ ملزم نے اپنے بیان میں کہاکہ ایچ ای سن کالج لاہور سے پڑھا بابر زوالقرنین خالہ کا بیٹا ہے، بابرکی اہلیہ بشری اورمیری اہلیہ صدف بہنیں ہیں۔ ملزم شیر ملک نے کہاکہ 1996 سے ہمارا آپس کا لین دین چل رہاہے لیکن ہماری آپس میں کوئی شراکت داری نہیں۔ملزم نے کہاکہ ہم بحیثیت کزن کے مدد کرتے اور ہم شکار بھی اکٹھے کرتے ہیں،خون کا رشتہ بھی ہے سکول کا بھی اور بیویوں کی طرف سے بھی۔ ملزم نے کہاکہ میرا کیس سے کوئی تعلق نہیں ہے, اگر ثابت ہوتا ہے تو جیل جانے کو بھی تیار ہوں۔ انہوںنے کہاکہ میں اور کسی کیس میں نامزد نہیں ہوں۔ وکیل صفائی نے کہاکہ پراسیکیوشن کو اندازا ہو گیا ہے کیس میں کچھ نہیں ہے۔ وکیل صفائی نے کہاکہ 2014میں ریفرنس فائل ہوا دو سال تیاری کیلئے لگے لیکن ابھی تک کچھ ثابت نہ کیاجاسکا۔وکیل صفائی نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ 8.3 ملین راجہ بابر ذولقرنین نے دوبئی اسلامک بینک اسلام آبادمیں منتقل کیے جو ایم ایس کارکے نے وصول کیے،اس رقم کی منی لانڈرنگ کا الزام ہے لیکن یہ تو طریقہ بتایا اور نہ دیگرکوئی تفصیل بتائی گئی۔وکیل صفائی نے کہاکہ راجہ بابر کے اکاو¿نٹس سے50لاکھ روپے آئے، جو پاکستان کے ہی ایک بنک سے دوسرے بنک میں آیا جو میرا ایک رشتہ دار بھی ہے۔وکیل صفائی نے کہاکہ وہ پیسے 2جولائی2009کو 50لاکھ دوبئی اسلامی بنک سے پاکستان میں ہی منتقل ہوئے ۔ وکیل صفائی نے کہاکہ 50لاکھ آنے سے6ماہ پہلے یہ 25۔25لاکھ روپے راجہ بابر ذولقرنین کودیتے ہیں، جو اس نے واپس کیے6ماہ بعد تو کیا یہ کیس بنتاہے۔وکیل صفائی نے کہاکہ منی لانڈرنگ کہناآسان ہے لیکن ثابت کرنابہت مشکل ہے۔کار کے رینٹل پاور کیس میں ملزم محمد شیرملک کے جسمانی ریمانڈ پر فیصلہ محفوظ کیا اور کچھ دیر بعد سناتے ہوئے عدالت نے کار کے رینٹل پاور کیس میں ملزم محمد شیرملک کے جسمانی ریمانڈ میں 13 مئی تک توسیع کر دی ۔

کار رینٹل پاور کیس 

مزید :

صفحہ آخر -