سانحہ داتا دربار پُرامن اہل سنت کو مشتعل کرنے کی سازش ہے،اویس نورانی

سانحہ داتا دربار پُرامن اہل سنت کو مشتعل کرنے کی سازش ہے،اویس نورانی

  

لاہور(اے این این)جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل صاحبزادہ شاہ محمد اویس نورانی نے کہا ہے کہ سانحہ داتا دربار پُرامن اہل سنت کو مشتعل کرنے کی سازش ہے۔ آسیہ مسیح کی سہولت کار کا کردار ادا کرنے والی حکومت زیادہ دیر قائم نہیں رہ سکے گی۔سانحہ داتا دربار پر پوری قوم غمزدہ ہے۔ حکومتی نااہلی کی وجہ سے دہشت گردوں نے پھر سر اٹھا لیا ہے۔ ریکارڈ توڑ مہنگائی نے عوام کا جینا دو بھر کر دیا ہے۔ حکومت نے نیشنل ایکشن پلان پر عمل کیا ہوتا تو سانحہ داتا دربار رونما نہ ہوتا۔ دہشت گردوں نے رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں بے گناہ انسانوں کا خون بہا کر سفاکیت کا بدترین مظاہرہ کیا ہے۔ سانحہ داتا دربار فرقہ واریت پھیلانے کی سازش ہے۔ حکومت سانحہ داتا دربار کے ملزمان کو گرفتار کر کے عبرت کا نشان بنائے ان خیالات کا اظہار انھوں نے جے یو پی کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

صاحبزادہ شاہ اویس نورانی نے مزید کہا کہ حکومت سانحہ داتا دربار کی تحقیقات کے لئے اعلی سطحی کمیشن قائم کرے۔ ہمارے حکمران غیر ملکی آقاؤں کے ایجنڈے پر چل رہے ہیں۔ عاشقان رسول متحد ہو کر اسلام کے خلاف ہونے والی ملکی اور عالمی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کریں۔ سانحہ داتا کے شہداء کے ورثا کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کرتے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -