نئی صنعتی پالیسی میں نالج اکانومی کو فروغ دینے پر توجہ دی جائے: اسلام آباد چیمبر 

نئی صنعتی پالیسی میں نالج اکانومی کو فروغ دینے پر توجہ دی جائے: اسلام آباد ...

  

اسلام آباد (این این آئی)اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر احمد حسن مغل نے اس بات پر زوردیا کہ حکومت جلد ایک نئی انڈسٹریل پالیسی تشکیل دے جس میں نالج اکانومی کو فروغ دینے پر خصوصی توجہ دی جائے تا کہ ملکی معیشت موجودہ بحرانی کیفیت سے نکل کر تیز رفتار ترقی کی راہ پر گامزن ہو۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی معیشت کو اس وقت متعدد چیلنجز کا سامنا ہے لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ حکومت ایسی صنعتی پالیسی بنائے جو زرعی، صنعتی اور سروسز شعبوں کو ان کی اصل صلاحیت کے مطابق ترقی دینے میں معاون ثابت ہو جس سے روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے اور غربت میں کمی واقع ہوگی جبکہ معیشت بہتر ترقی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ نئی صنعتی پالیسی اس طرح تشکیل دی جائے کہ اس کے ثمرات کسی ایک صوبے یا علاقے کی بجائے پورے ملک میں پھیلیں اور ہر انکم گروپ کو اس کا فائدہ حاصل ہو۔انہوں نے کہا کہ حکومت تمام سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے متفقہ صنعتی پالیسی تشکیل دینے کی کوشش کرے۔احمد حسن مغل نے کہا کہ پاکستان نے دفاعی صنعت کے شعبے میں کافی ترقی کی ہے جس کو قومی و بین الاقوامی سطح پر بھی تسلیم کیا جا تا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی صنعتی پالیسی میں دفاعی صنعت کو بھی مزید مضبوط بنانے پر توجہ دی جائے جس سے ہماری دفاعی شعبے کی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ہو گا۔ 

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کاروبار کی زیادہ لاگت صنعتکاری کی ترقی کی راہ میں ایک اہم رکاوٹ ہے لہذا نئی صنعتی پالیسی میں کاروبار کی لاگت کو کم کرنے اور برآمدات کو فروغ دینے پر زیادہ توجہ دی جائے۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر رافعت فرید اور نائب صدر افتخار انور سیٹھی نے کہا کہ پاکستان ویلیو ایڈیڈ مصنوعات تیار کر کے برآمدات میں کئی گنا اضافہ کر سکتا ہے لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ نئی صنعتی پالیسی میں ویلیو ایڈیڈ مصنوعات تیار کرنے پر بہتر توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی معیشت کو زرعی سے نالج اکانومی میں تبدیل کرنے کیلئے سروسز اور پیداواری شعبوں میں مضبوط روابط کا قیام اشد ضروری ہے لہذا نئی صنعتی پالیسی میں اس طرف بھی خصوصی توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے پاس باصلاحیت نوجوانوں کی اکثریت موجود ہے جو کمیونیکیشن، انفارمیشن اور انٹرنیٹ ٹیکنالوجیز سے بخوبی آگاہ ہے لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ نئی صنعتی پالیسی میں اعلیٰ معیار کی ریسرچ اور انوویشن کو فروغ دینے کی کوشش کی جائے تا کہ پاکستان آئی سی ٹی ٹیکنالوجیز کو استعمال میں لا کر تیز رفتار ترقی حاصل کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا ترقی کی دوڑ میں آگے بڑھنے کیلئے آرٹیفیشل انٹیلی جینس کا استعمال بڑھا رہی ہے لہذا نئی صنعتی پالیسی صنعتی شعبے کی موجودہ اورمستقبل کی افرادی قوت کو آرٹیفیشل انٹیلی کی تربیت فراہم کرنے میں معاون ثابت ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ نئی صنعتی پالیسی میں پیداواری طریقوں کو بھی جدید بنانے پر بہتر توجہ دی جائے تا کہ پاکستان عالمی معیار کی مصنوعات تیار کر سکے جس سے برآمدات بہتر ہوں گی اور ملک صنعتی و تجارتی سرگرمیوں کا مرکز بن کر بہتر ترقی حاصل کرے گا۔  

مزید :

کامرس -