ہیلتھ کیئر کمیشن نے اتائیوں سے نمٹنے کیلئے ٹیمیں تشکیل دے دیں 

  ہیلتھ کیئر کمیشن نے اتائیوں سے نمٹنے کیلئے ٹیمیں تشکیل دے دیں 

  

کراچی (پ ر) سند ھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے اتائےت سے نمٹنے کیلئے مختلف ٹیمیں تشکیل دے کران کے خلاف کارروائیاں مزید تیز کردےں اور اےک ہفتے میں 107کلینکس کو مختلف اضلاع میں سیل کردیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ میں اےچ آئی وی وائرس کے کےسز سامنے آنے کے بعد سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے لاڑکانہ اور دیگر اضلاع میں اتائیوں کے خلاف کارروائیاں مزید تیز کردیں ۔ انسداد اتائیت ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے اتائیوں کے خلاف بھرپور کارروائیاں جاری ہیں اور گذشتہ ایک ہفتے کے دوران لاڑکانہ میں 71، حیدر آباد میں 7، میرپور خاص میں 20، گھوٹکی میں 5اور کراچی میں لیاری کے علاقے میں چار مزید کلینکس کو سیل کردیا گیا ۔جبکہ 31مزید کلینکس کو لاڑکانہ اور حیدر آباد میں وارننگ نوٹس جاری کردیئے گئے ہیں۔ انسداد اتائیت ڈائریکٹوریٹ کے مطابق سندھ میں مختلف کارروائیوں کے دوران300اتائیوں کے کلینکس کو بند کیا جاچکا ہے جبکہ ان میں سے 44کو کراچی میں بند کیا گیا۔ دوسری جانب چیف ایگزیکٹیو آفیسر سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے لاڑکانہ میں محکمہ صحت کے افسران سے ملاقات کی اور اتائیوں کے خلاف جاری کریک ڈاﺅن پر تفصیلا گفتگو ہوئی ۔ سی ای او سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ، ہیومیوپےتھی اور طب کے نمائندوں سے بھی ملاقات کی اور انہیں کمیشن کی کارکردگی سے آگاہ کیا۔ اسی طرح ڈی آئی جی لاڑکانہ اور کمشنر لاڑکانہ سے سندھ ہیلتھ کےئر کمیشن کی ٹیم نے ملاقات کی اور اتائیوں کے خلاف جاری آپریشن میں تعاون پر تبادلہ خیال کیا ۔ڈائریکٹوریٹ آف کلینکل گورننس اینڈ ٹریننگ نے اسپتالوں کے طبی فضلے کو ٹھکانے لگانے کی حوالے سے ایک اہم کمیٹی میٹنگ منعقد کی جس میں تمام اسٹیک ہولڈرز نے شرکت کی ۔ کمیٹی میٹنگ میں طبی فضلہ کو ٹھکانے لگانے کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا کیا گیا ۔ اس اجلاس میں منےجنگ ڈائریکٹر سندھ سولڈ وےسٹ مینجمنٹ بورڈ ڈاکٹر اے ڈی سنجرانی،ڈائریکٹر سی ای پی اے وقار حسین ،قومی ادارہ برائے اطفال کے پتھالوجسٹ ڈاکٹر فرقان حسین اور دیگر ماہرین نے شرکت کی۔ ڈائریکٹوریٹ آف لائسنسنگ اینڈ ایکریڈیشن کو مزید 140اسپتالوں نے رجسٹریشن کیلئے درخواستیں جمع کروادیں جبکہ 77صحت کے مراکز کو رجسٹریشن سرٹےفکٹس کا اجراءکیا گیا جس سے سندھ میں ٹوٹل رجسٹرڈ اسپتالوں کی تعداد 4588ہوگئی۔ سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن کی ٹیم نے فاطمید فاﺅنڈیشن اور ڈاﺅ ڈینٹل کالج کا معائنہ بھی کیا جبکہ تاج میڈیکل کمپلیکس ہمدرد یونیورسٹی اسپتال ، بیگم اختیر رخسانہ میموریل ٹرسٹ اسپتال ، سےفی اسپتال ٹرسٹ اور ضیاءاسپتال کو عبوری لائسنس جاری کردیئے گئے۔ شکاےات کے وصولی کے بعد ڈائریکٹوریٹ آف کمپلینٹس کی ٹیم نے گھوٹکی اور سکھر میں صحت کے مراکز کا دورہ کیا اور قانون کے مطابق کارروائی کی گئی۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -