نوازشریف کو نوٹس جاری، سپریم کورٹ میں ایک اور کیس سماعت کیلئے مقرر ہوگیا

نوازشریف کو نوٹس جاری، سپریم کورٹ میں ایک اور کیس سماعت کیلئے مقرر ہوگیا
نوازشریف کو نوٹس جاری، سپریم کورٹ میں ایک اور کیس سماعت کیلئے مقرر ہوگیا

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ میں پاکپتن دربار اراضی کیس سماعت کے لیے مقرر کردیا گیا اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب نواز شریف کو نوٹس جاری کردیا گیا۔

عدالت عظمی نے پاکپتن اراضی ازخود نوٹس کیس بدھ کو سماعت کیلیے مقرر کردیا ہے اس کیس میں دیگر فریقین کے ساتھ سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کو نوٹس جاری کر دیا گیا ہے، جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ سماعت کرے گا۔ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی بنائی گئی جے آئی ٹی نے نواز شریف کو غیر قانونی طور پر زمین کی منتقلی کا ذمہ دار قرار دیا تھا۔ یاد رہے کہ فروری میںپاکپتن دربار اراضی کی غیر قانونی منتقلی کیس میں میاں نواز شریف نے بطور وزیر اعلی پنجاب جواب سپریم کورٹ میں جمع کروا رکھا ہے۔ نواز شریف نے جے آئی ٹی رپورٹ کو یکطرفہ اور بدنیتی پر مبنی قرار دیتے ہوئے عدالت سے جے آئی ٹی رپورٹ مسترد کرنے کی استدعا کر رکھی ہے۔

واضح رہے کہ 1985 میں اس وقت کے وزیراعلیٰ پنجاب نواز شریف نے پاکپتن میں دربار بابا فرید کے گرد محکمہ اوقاف کی اراضی غیر قانونی طور پر دربار کے سجادہ نشین کے نام الاٹ کردی تھی اور محکمہ اوقاف کا جاری کردہ زمین واپس لینے کا نوٹیفیکیشن بھی منسوخ کردیا تھا۔ بعدازاں سجادہ نشین کی جانب سے اس اراضی کو آگے فروخت کردیا گیا تھا۔

مزید :

قومی -