شاعر، ڈرامہ نگار، فلم سا ز اور نامور اداکار اطہر شاہ خان انتقال کر گئے

  شاعر، ڈرامہ نگار، فلم سا ز اور نامور اداکار اطہر شاہ خان انتقال کر گئے

  

لاہور،کراچی(فلم رپورٹر) پاکستان ٹیلی ویژن کارپوریشن کے ڈرامے”انتظار فرمایئے“ کے کردار”جیدی“ سے شہرت حاصل کرنے والے اردو دنیا کے ممتاز شاعر، ڈرامہ نگار، فلم ساز اور نامور اداکار اطہر شاہ خان اپنے خالق حقیقی سے جا ملے۔اداکار اطہر شاہ خان جیدی طویل عرصے سے شوگر اور گردے کے عارضے میں مبتلا تھے۔اطہر شاہ خان مرحوم نے سوگواران میں اہلیہ اور چار بیٹے چھوڑے ہیں۔مرحوم اطہر شاہ خان بھارت کے شہر رام پور میں پیدا ہوئے اور انتقال کے وقت ان کی عمر 77 برس سے زائد تھی۔ آپ 1947 میں خاندان کے ساتھ لاہور اور 1957 میں کراچی منتقل ہوئے۔اطہر شاہ خان جیدی نے لاہور سے ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد پشاور سے سیکنڈری تک پڑھا اور پھر کراچی میں اْردو سائنس کالج سے گریجوایشن کیا، بعدازاں انہوں نے پنجاب یونیورسٹی سے صحافت کے شعبے میں ماسٹرز بھی کیا۔ان کا شمار ٹیلی ویڑن کے ابتدائی ڈرامہ نگاروں اور فن کاروں میں کیا جاتا ہے۔اطہر شاہ خان کی سپرہٹ ڈرامہ سیریلز میں انتظار فرمائیے، ہیلو ہیلو، جانے دو، برگر فیملی، آشیانہ، آپ جناب، جیدی اِن ٹربل، پرابلم ہاؤس، ہائے جیدی، کیسے کیسے خواب، با اَدب با ملاحظہ ہوشیار اور دیگر شامل ہیں۔انتظار فرمائیے، وہ سیریل تھی جس نے اطہر شاہ خان کو ’جیدی‘ بنا کر شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا تھا۔2001ء میں انہیں حکومت پاکستان کی جانب سے پرائیڈ ا ٓف پرفارمنس ایوارڈ سے نوازا گیا اور پاکستان ٹیلی ویژن نے جب اپنی سلور جوبلی منائی تو اطہر شاہ خان جیدی کو گولڈ میڈل عطا کیا۔شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات شاہد حمید،شان،معمر رانا،شاہدہ منی،میگھا،اکرم اداس،مہک نور،مسعود بٹ،اچھی خان،جرار رضوی،نادیہ علی،ہانی بلوچ،مایا سونو خان،عامر راجہ،آغا قیصر عباس،سہراب افگن،حاجی عبد الرزاق،یار محمد شمسی صابری،بینا سحر،ثناء بٹ،سدرہ نور،بی جی، عباس باجوہ،ندا چوہدری،ہنی شہزادی،اسد نذیر،نادیہ جمیل،عقیل حیدر،گلفام،طاہر انجم،طاہر نوشاد،ڈاکٹر اجمل ملک،ملک طارق،ارشد چوہدری،ڈیشی راج،آفرین خان،آشا چوہدری،احسن خان،نیلم منیر،رزکمالی،وہاج خان،اسد مکھڑا،ثناء بٹ،گڈوکمال،جہانزیب علی،ثمینہ بٹ،ناصر چنیوٹی،تابندہ علی،بابرہ علی،قیصر لطیف،ماہ نور،سلیم بزمی، لاڈا،ظفر عباس کھچی،مومنہ بتول،عائشہ جاوید،عارف بٹ،عینی رباب،عروج،حمیرا،عاصم جمیلِ،آغا حیدر اور رضی خان کا کہنا ہے کہ اطہر شاہ خان جیدی جیسے فنکار روز روز نہیں پیدا ہوتے وہ انتہائی باکمال آرٹسٹ اور بہترین انسان تھے اللہ تعالیٰ مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں جگہ عطاء فرمائے اور لواحقین کو صبر جمیل عطاء کرے۔سیاسی اور عسکری قیادت نے معروف مزاحیہ اداکار،مصنف اور شاعر اطہر شاہ خان کے انتقال پر افسوس کا اظہارکرتے ہوئے اللہ تعالیٰ سے مرحوم کی مغفرت،درجات کی بلندی اور لواحقین کو صبر جمیل عطا کرنے کی دعا کی ہے۔ گورنرسندھ نے کہا کہ اطہر شاہ خان نے جیدی کے کردار کے ذریعہ سماجی برائیوں پر بھرپور طنز کیا،انہوں نے اپنی لازوال اداکاری سے جیدی کے کردار کو امر کردیا،ان کے ڈرامے اور شاعری اردو مزاحیہ ادب کا شاہکار ہیں۔ گورنرسندھ نے کہا کہ اطہر شاہ خان نے اردو مزاح کو ایک نئی جہت دی اور ان کے ڈراموں سے فن اداکاری سے وابستہ افراد بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں،بلاشبہ اطہر شاہ خان انتہائی با صلاحیت فنکار رہے جنھوں نے اپنی اداکاری کے ذریعہ معاشرتی برائیوں اور ان سے جنم لینے والی خرابیوں کو اجاگر کیا۔وزیر اطلاعات و بلدیات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے معروف مزاحیہ اداکار اطہر شاہ خان عرف جیدی کے انتقال پر اپنے تعزیتی بیان میں کہا ہے کہ اطہر شاہ کا انتقال پورے ملک کو سوگوار کرگیا ہے۔ پاکستان ٹیلی ویژن کے معروف شاعر،ڈرامہ نگار اور جیدی انکل کے کردار سے شہرت پانے والے اداکار اطہر شاہ خان عرف جیدی کے انتقال پر آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی کے صدر محمد احمد شاہ نے انتہائی دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کا نامور شاعر، ڈرامہ نگار، مزاح نگار، اور فلمساز اطہر شاہ خان المعروف جیدی کے انتقال پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ چہروں پر مسکراہٹیں بکھرا کر لوگوں کے غم بانٹنے والا جیدی آج سفر آخرت پر روانہ ہوگیا،لاہور، پشاور اور کراچی میں رہنے کی بنا پر یہاں کے کلچر کی جھلک ان کے کلام اور مزاج میں نمایاں تھی،شگفتہ مزاج پٹھان کو قوم بھلا نہیں پائے گی، اپنی کتابوں، ڈراموں اور شاعری کی صورت وہ زندہ رہیں گے ،اللہ تعالی مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے اور اہل خانہ کو صبر جمیل دے۔ آمین۔

اظہار افسوس

مزید :

صفحہ اول -