ایچ ای سی آن لائن ٹرانسفر پالیسی نظرثانی کرے:ینگ لیکچررز

ایچ ای سی آن لائن ٹرانسفر پالیسی نظرثانی کرے:ینگ لیکچررز

  

لالاہور(پ ر)چیئرمین ینگ لیکچررز اینڈ پروفیسرز پنجاب پروفیسر ظفر اقبال خان نے کہاہے کہ ہایر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب آن لائن ٹرانسفر پالیسی 2020 پر فورا نظرثانی کرے۔ سالوں سے التواء کا شکار اساتذہ کے پروموشن عمل کو بحال کیا جائے،کنونس الاونس کی کٹوتی بند کی جائے۔ محکمہ ہایر ایجوکیشن کی نئی ٹرانسفر پالیسی کے مطابق تین سال کی شرط عائد کرنے کے ساتھ ساتھ سنگل سیٹ پر کام کرنے والے اساتذہ کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا ہے، اس طرح اساتذہ کو انکے بنیادی حقوق سے محروم رہاجا رہا ہے اور ان کے اندر شدید بے چینی پائی جاتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار ینگ لیکچررز اینڈ پروفیسرز پنجاب کے مرکزی چیئرمین ظفر اقبال خان نے گزشتہ روز مرکزی دفتر میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں، محمد شہزاد ارشد، محمد شیراز اشرف، ظہیر عباس، محمد وسیم، محمد وقاص، محمد احمر خاں، دلشاد رسول کسانہ، ندا خادم،مدیحہ کنول اور اسماء شبیر عہدیداربھی شریک ہوئے۔

انہوں نے مزید اس پالیسی کو انسانی حقوق کے منافی قرار دیا اور کہا کہ ہر شخص کو ا پنے گھر کے قریب ٹرانسفر کا بنیادی حق حاصل ہے۔ لہذا انہوں نے ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ ساتھ وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کرتے ہیں کہ موجودہ پالیسی پر نظر ثانی کی جائے۔ تین سال کی شرط ختم کی جائے۔ سنگل ٹیچر کو ٹرانسفر کا حق دیا جائے۔ دس دس سال سے دوردراز کالجوں میں کام کرنے والوں کوہر صورت ان کے گھروں کے قریب ٹرانسفر کا حق دیا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ محکمہ ہایر ایجوکیشن کے اساتذہ کی تنخواہوں میں دیگر محکمہ جات کے مساوی اضافہ یقینی بنایا جائے اور کئی سالوں سے التواء کا شکار اساتذہ کی پروموشن کا عمل فوری طور پر بحال کیا جائے اور اساتذہ کا استحصال بند کیا جا ئے۔ حالات کے پیش نظر سی ٹی آئیز کو بروقت معاوضہ دیا جائے۔ ینگ لیکچرار اینڈ پروفیسرز پنجاب دعا گو ہے خدا جلد اس کورونا وائرس جیسی موذی وبا سے چھٹکارہ عطا فرمائے تاکہ طلباء کا تعلیمی سال اور مستقبل ضائع ہونے سے محفوظ بن جائے۔

ہور(پ ر)چیئرمین ینگ لیکچررز اینڈ پروفیسرز پنجاب پروفیسر ظفر اقبال خان نے کہاہے کہ ہایر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب آن لائن ٹرانسفر پالیسی 2020 پر فورا نظرثانی کرے۔ سالوں سے التواء کا شکار اساتذہ کے پروموشن عمل کو بحال کیا جائے،کنونس الاونس کی کٹوتی بند کی جائے۔ محکمہ ہایر ایجوکیشن کی نئی ٹرانسفر پالیسی کے مطابق تین سال کی شرط عائد کرنے کے ساتھ ساتھ سنگل سیٹ پر کام کرنے والے اساتذہ کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا ہے، اس طرح اساتذہ کو انکے بنیادی حقوق سے محروم رہاجا رہا ہے اور ان کے اندر شدید بے چینی پائی جاتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار ینگ لیکچررز اینڈ پروفیسرز پنجاب کے مرکزی چیئرمین ظفر اقبال خان نے گزشتہ روز مرکزی دفتر میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں، محمد شہزاد ارشد، محمد شیراز اشرف، ظہیر عباس، محمد وسیم، محمد وقاص، محمد احمر خاں، دلشاد رسول کسانہ، ندا خادم،مدیحہ کنول اور اسماء شبیر عہدیداربھی شریک ہوئے۔ انہوں نے مزید اس پالیسی کو انسانی حقوق کے منافی قرار دیا اور کہا کہ ہر شخص کو ا پنے گھر کے قریب ٹرانسفر کا بنیادی حق حاصل ہے۔ لہذا انہوں نے ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ ساتھ وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کرتے ہیں کہ موجودہ پالیسی پر نظر ثانی کی جائے۔ تین سال کی شرط ختم کی جائے۔ سنگل ٹیچر کو ٹرانسفر کا حق دیا جائے۔ دس دس سال سے دوردراز کالجوں میں کام کرنے والوں کوہر صورت ان کے گھروں کے قریب ٹرانسفر کا حق دیا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ محکمہ ہایر ایجوکیشن کے اساتذہ کی تنخواہوں میں دیگر محکمہ جات کے مساوی اضافہ یقینی بنایا جائے اور کئی سالوں سے التواء کا شکار اساتذہ کی پروموشن کا عمل فوری طور پر بحال کیا جائے اور اساتذہ کا استحصال بند کیا جا ئے۔ حالات کے پیش نظر سی ٹی آئیز کو بروقت معاوضہ دیا جائے۔ ینگ لیکچرار اینڈ پروفیسرز پنجاب دعا گو ہے خدا جلد اس کورونا وائرس جیسی موذی وبا سے چھٹکارہ عطا فرمائے تاکہ طلباء کا تعلیمی سال اور مستقبل ضائع ہونے سے محفوظ بن جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -