3دن لاک ڈاؤن‘ حکومت حقائق سامنے رکھ کر فیصلے کرے‘ سلیمان صدیقی

  3دن لاک ڈاؤن‘ حکومت حقائق سامنے رکھ کر فیصلے کرے‘ سلیمان صدیقی

  

ملتان (نیوز رپورٹر) حکومت کی جانب سے رمضان المبارک کے آخری عشرہ سے قبل چھوٹے تاجروں کو ہفتہ میں چار دن صبح سے 5 بجے شام تک لاک ڈاون سے استثنی دینے کے احکامات کو تاجروں نے ہوا میں اڑا کر رکھ دیا ہے حکومت کی جانب سے سوموار، منگل، بدھ اور جمعرات تک چھوٹے تاجروں کو کاروبار کرنے کی اجازت دی گئی تھی جبکہ جمعہ، ہفتہ اور اتوار کے روز مکمل لاک ڈاون رکھنے کی ہدایت کی گئی تھی لیکن شہر کی مختلف مارکیٹوں میں ایک روز قبل ہی مارکیٹیں کھول (بقیہ نمبر30صفحہ6پر)

دی گئی ہیں اور دن بھر کاروباری سرگرمیوں سمیت مارکیٹوں میں صارفین کی بھی بڑی تعداد خرید و فروخت میں مصروف نظر آئی ہے شہریوں کا کورونا وائرس کی روک تھام کے لیئے حکومتی ہدایات کو یکسر نظر انداز و غیر ذمہ دارانہ طرز عمل شہریوں کے لیئے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے جبکہ دوسری طرف تاجروں نے ہفتہ میں چار روز دکانیں کھولنے کے حکومتی شیڈول کو یکسر مسترد کرتے ہوئے موقف اپنایا ہے کہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ سے قبل چند روز کے لیئے دکانیں کھولنے کے احکامات کو تاجروں کی معاشی صورتحال کے بالکل برعکس اور ناانصافی کے مترادف قرار دیا ہے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی، شیخ جاوید اختر، شیخ اکرم حکیم، محمد اختر بٹ، جعفر علی شاہ، غضنفر ملک، کلب عابد، چوہدری محمود علی، ذیشان قریشی، مرزا نعیم بیگ اور عارف فصیح اللہ نے کہا کہ حکومت نے رمضان المبارک کے آخری 15 دنوں میں تاجروں کو ریلیف دینے کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہیں لیکن ان پندرہ دنوں کے دورانیہ میں بھی 6 دنوں کی بندش نے تاجر برادی کو شدید تشویش میں مبتلا کرکے رکھ دیا ہے انہوں نے کہا کہ چھوٹے تاجر پہلے ہی دو ماہ کے لاک ڈاون سے معاشی طور پر تباہی کے دہانے پر پہنچ چکے ہیں اب حکومت نے چھ دن کی بندش عائد کرکے تاجروں کو ایک نئے مخمصے میں ڈال دیا ہے انہوں نے وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار سے مطالبہ کیا ہے کہ تاجروں پر رمضان المبارک کے ان آخری پندرہ دنوں پر عائد کی جانیوالی پابندیوں کا فی الفور خاتمہ کیا جائے تاکہ چھوٹے دکاندار اور ان سے منسلک ہزاروں خاندان جو طویل لاک ڈاون سے شدید متاثر ہوئے ہیں ان کے گھروں کے چولہے اس چھ روزہ بندش سے ٹھنڈے ہونے سے بچایا جائے وہ مزید کسی بندش کے متحمل نہیں ہوسکتے اور حکومت بھی زمینی حقائق کو سامنے رکھ کر عوام دوست فیصلے کرے۔

سلیمان صدیقی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -