پیف سکولز ایشو‘ رانا مشہود کا پنجاب اسمبلی میں توجہ دلاؤ نوٹس

  پیف سکولز ایشو‘ رانا مشہود کا پنجاب اسمبلی میں توجہ دلاؤ نوٹس

  

ملتان (سٹاف رپورٹر) حق مانگنے پر پیف سکولزمالکان و اساتذہ پر مقدمہ کیا گیا سابق صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہودنے پنجاب اسمبلی میں توجہ دلاؤ نوٹس میں سپیکر چوہدری پرویز الٰہی کو معاملات میں گڑ بڑ‘ مخصوص افراد کے حربوں‘ حالات کی سنگینی سے آگاہ کردیا۔ سابق صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود نے پوائنٹ آف آرڈر پرسپیکر چوہدری پرویز الٰہی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کا شکریہ کہ پیف کے معاملے میں دلچسپی لی‘ پیف سکولز مالکان و اساتذہ پنجاب اسمبلی کے باہر اس (بقیہ نمبر31صفحہ6پر)

لئے آئے تھے کہ آپ کو صورتحال سے آگاہ کرسکیں‘ اس پر آپ نے تحقیقاتی پارلیمانی کمیٹی بنا دی لیکن دیکھیں کہ آپ کے نوٹس لینے کے باوجودپیف سکولز مالکان و اساتذہ پر ایف آئی آرز کاٹ دی گئیں اور اساتذہ کو گرفتار کرلیا گیا‘ یہ حرکت انتہائی قابل مذمت اور تشویشناک ہے۔یہ سب کیا ہے‘ یہ بات آپ کو‘ مجھ کو اور سب کو سمجھ میں آتی ہے کہ کیا ہورہا ہے‘ یہ شعبہ تعلیم کا ایک اہم ترین ایشو ہے جس سے لاکھوں غریب بچوں کا مستقبل اور ہزاروں اساتذہ کا روزگار وابستہ ہے‘ اس ایشو پر خاموش نہیں رہا جاسکتا‘انہوں نے مطالبہ کیا کہ فوری طورپر پیف سکولز مالکان و اساتذہ کیخلاف درج مقدمات خارج کئے جائیں اور یہ صورتحال پیدا کرنے کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔ ان ایف آئی آرز سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ حق مانگنے والوں کی آواز کو دبانے کیلئے ان کو مقدمات میں پھنسایا جارہا ہے‘ یہ کتنا ظلم ہے کہ ایک تو ان کو کئی ماہ سے واجبات ادا نہیں کئے گئے اور اپنا حق مانگنے پر ان کے خلاف پرچے درج اور انہیں گرفتار کیاجارہاہے‘امید ہے کہ آپ اس صورتحال کا سخت نوٹس لیں گے۔ دریں اثنا سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کی جانب سے تشکیل دی گئی تحقیقاتی پارلیمانی کمیٹی آج اپنی رپورٹ پیش کرے گی‘ اس کمیٹی میں حکومتی اور اپوزیشن ارکان شامل ہیں جبکہ پیف سکولز اتحاد کے 5نمائندگان بھی شامل کئے گئے ہیں۔ دریں اثنا پیف سکولز اتحاد جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ممبر فرید خان بنگش نے کہا ہے کہ صوبائی وزیر تعلیم ایک سازش کے تحت پیف کے گزشتہ مالی سال کے سابقہ فنڈز ٹرانسفر ہونے کی راہ میں روڑے اٹکا رہے ہیں تاکہ پیف کے 6.9 بلین کے سابقہ مالی سال کے فنڈ پیف اکاؤنٹ میں ٹرانسفر نہ ہونے پائیں اور وہ تیس مئی کو لیپس ہو جائیں تاکہ نہ فنڈ ہوں گے نہ محکمہ ہوگا‘یعنی”نہ ڈھولا ہو سی نا رولا ہوسی“عید کی چھٹیاں 22 مئی کو ہوں گی جس کے بعد 30 مئی تک کوئی ٹائم نہیں بچے گا چنانچہ ہمارے پاس یہ دو ہفتے ہیں اگر ہم پیف کے اکاؤنٹ میں فنڈز ٹرانسفر کر وا سکے تو یہ ہمارے حق میں بہت بہتر ہوجائے گا ورنہ شدید نوعیت کے خطرات لاحق ہو سکتے ہیں۔ تمام پیف پارٹنرز نے پہلے بھی اپنے صوبائی ممبران اسمبلی کے ساتھ ملاقاتوں کا جو سلسلہ جاری کیا تھا‘ اس کے ثمرات ہمیں لاہور اسمبلی میں نظر آئے کسی نے پیف کی مخالفت نہ کی بلکہ ہمدردی ہی دکھائی‘ اس لئیا ب بھی ہنگامی بنیادوں پر گھروں سے نکل پڑیں اور عید سے پہلے پیف کے بقایا فنڈ ٹرانسفر کرانے میں اپنی دستیاب تمام توانائیاں لگا دیں۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -